نظم: رگوں میں خون نہیں، آتش سیال دوڑتا ہے... ام ماریہ حق

ایک انہونے پت جھڑ نے، خوش نما شاخوں پر ڈیرا ڈالا ہے، ہر سمت، حدِ نظر، ملگیجا سا اجالا ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

ام ماریہ حق

ایک انہونے پت جھڑ نے

خوش نما شاخوں پر ڈیرا ڈالا ہے

ہر سمت

حدِ نظر

ملگیجا سا اجالا ہے

دلوں پر ہمارے

گزرتا ہر پل

ہے ہجر کی رات سے بھی بھاری

اسی لئے تو یہاں سبھی نے

انقلاب کی مشعل تھامی

کہ اب رگوں میں خون نہیں

آتش سیال دوڑتا ہے

جو ہمتوں کے زخمی پرند کو

نئے بال و پر دے رہا ہے

جبر اور ظلمتوں کی

سخت راتوں کو

نئی سحر کی

خبر دے رہا ہے

~ ام ماریہ حق