شریاس، پنت کی شاندار بلے بازی نے دہلی کو دلائی جیت، پوائنٹس ٹیبل میں سب سے اوپر

شریاس نے 41 گیندوں پر دو چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 47 رنز بنائے جبکہ پنت نے 21 گیندوں میں تین چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 35 رنز بنائے۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

سابق کپتان شریاس ایئر (47) اور موجودہ کپتان رشبھ پنت (35) کی مدد سے دہلی کیپیٹلز نے آئی پی ایل 14 کے 33 ویں میچ میں سن رائزرز حیدرآباد کو آٹھ وکٹوں سے شکست دی۔ اس جیت سے دو پوائنٹس کے ساتھ دہلی نے پوائنٹس ٹیبل میں پہلی پوزیشن حاصل کی۔

135 رنز کے ہدف کے تعاقب میں دہلی کیپیٹلز کے بلے بازوں نے شروع سے ہی جارحانہ کرکٹ کھیلی۔ اوپنرز پرتھوی شا اور شیکھر دھون نے بے خوف بلے بازی کی ۔ تاہم پرتھوی تیسرے اوور کی آخری گیند پر 11 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہو گئےاور 20 کے سکور پر پہلی وکٹ گر گئی۔ اس کے بعد شیکھر نے شریس کے ساتھ اننگز کو آگے بڑھایا اور میچ کو ہولڈ کر لیا۔ اس جوڑی نے دوسری وکٹ کے لیے 52 رنز کی اہم شراکت داری کی ، جس نے میچ میں دہلی کی بالا دستی مزید مستحکم کی ۔ 72 کے سکور پر شیکھر کے آؤٹ ہونے کے بعد کریز پر آنے والے کپتان پنت نے اپنا فطری کھیل کھیلا اور نہ صرف باؤنڈری ماری بلکہ ٹیم کو فتح کی طرف بھی لے گئے۔ انہوں نے شریاس کے ساتھ 67 رنز کی اہم شراکت داری کی۔ ان دونوں پاور ہٹنگ ہی ٹیم کو فتح کی دہلیز پر لے گئی۔


شریاس نے 41 گیندوں پر دو چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 47 رنز بنائے جبکہ پنت نے 21 گیندوں میں تین چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 35 رنز بنائے۔ شیکھر دھون نے 37 گیندوں میں چھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 42 رنز بنائے۔ دہلی کیپیٹلز کے تیز گیند باز اینریک نورتجے ، جنہوں نے چار اوورز میں 12 رنز دے کر دو وکٹیں حاصل کیں ، اکنامی بولنگ کرتے ہوئے انہیں 'پلیئر آف دی میچ' قرار دیا گیا۔ ان کے علاوہ کاگیسو ربادا نے تین اور اکشر پٹیل نے دو وکٹیں حاصل کیں۔

قبل ازیں عبدالصمد (28) اور راشد خان (22) کی قابل تعریف اننگز نے آئی پی ایل 14 کے 32 ویں میچ میں دہلی کیپیٹلز کو 135 رنز کا ہدف دیا۔


حیدرآباد نے ٹاس جیت کر بیٹنگ کا فیصلہ کیا لیکن منصوبہ کے مطابق بڑا اسکور نہ کرسکا۔ انہوں نے اپنے مقررہ 20 اوورز میں نو وکٹیں کھونے کے بعد 134 رنز کا اوسط ہدف دیا۔ اس کی شروعات اچھی نہیں تھی۔ دھماکہ خیز بلے باز ڈیوڈ وارنر پہلے اوور کی تیسری گیند پر آؤٹ ہونے کے بعد پویلین لوٹ گئے۔ اس کے بعد ریدھیمان ساہا اور کپتان کین ولیمسن نے اننگز کو صحیح سمت میں منتقل کرنے کی کوشش کی ، لیکن حیدرآباد کی دوسری وکٹ 29 کے سکور پر ساہا کی شکل میں گر گئی۔ پھر ولیمسن نے منیش پانڈے کے ساتھ مل کر اننگز کو سنبھالنے کی کوشش کی۔ دونوں کے درمیان تیسری وکٹ کے لیے 31 رنز کی شراکت ہوئی۔ دریں اثنا ، کین ولیمسن دسویں اوور کے اختتام پر پٹیل کی گیند پر شمرون ہیٹمیئر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوئے۔ اس سے قبل ولیمسن کو دوبار زندگی ملی ۔ ان کے کیچ کپتان رشبھ پنت اور پرتھوی شا نے چھوڑے۔ ولیمسن 26 گیندوں پر 18 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے۔

اس کے فورا بعد اگلے اوور کی پہلی گیند پر کاگیسو ربادا نے منیش پانڈے کو بولڈ کیا۔ پانڈے 16 گیندوں پر 18 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ ٹاپ آرڈر فلاپ ہونے کے بعد کریز پر آنے والے عبدالصمد اور عادل رشید خان نے اننگز میں جان ڈال دی اور ٹیم کو 134 کے اوسط اسکور پر لے گئے۔ صمد نے 21 گیندوں میں دو چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 28 رنز بنائے اور راشد نے 19 گیندوں میں دو چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 22 رنز بنائے۔ کاگیسو ربادا نے چار اوورز میں 37 رنز دے کر تین رنز بنائے جبکہ اینریک نورٹجے اور اکشر پٹیل نے دو دو وکٹیں حاصل کیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 23 Sep 2021, 7:11 AM