دنیا میں جاری دو جنگوں کے درمیان دو طاقتور ترین رہنماؤں کی ملاقات آج

بائیڈن شی جن پنگ کی ملاقات میں اسرائیل حماس جنگ سے لے کر روس کے یوکرین پر حملے، شمالی کوریا کے روس کے ساتھ تعلقات اور کئی موضوعات پر تبادلہ خیال ہوگا۔

<div class="paragraphs"><p>فائل تصویر آئی اے این ایس</p></div>

فائل تصویر آئی اے این ایس

user

قومی آوازبیورو

دنیا میں اس وقت جنگ کا ماحول ہے۔ ایک طرف روس اور یوکرین کے بیچ جنگ چل رہی ہے اور اب  اسرائیل اور حماس کے درمیان بھی جنگ ہو رہی ہے ۔ اسی دوران خبر ہے کہ  14  نومبر یعنی آج امریکی صدر جو بائیڈن اور چینی صدر شی جن پنگ اے پی ای سی (APEC)  کے  سربراہی اجلاس کے موقع پر آمنے سامنے ہوں گے۔ سب کی نظریں اس ملاقات پر ہیں ۔

وائٹ ہاؤس نے پیر کو کہا کہ صدر جو بائیڈن اور چینی صدر شی جن پنگ اس ہفتے ایشیا پیسیفک اکنامک کوآپریشن یعنی (APEC)  کے سربراہی اجلاس کے موقع پر ملاقات کریں گے تاکہ مواصلات کو مضبوط بنانے اور مسابقت کے انتظام پر تبادلہ خیال کیا جا سکے۔ دونوں صدور کی یہ ملاقات، جو بدھ کو سان فرانسسکو بے کے علاقے میں آمنے سامنے ہو گی، انڈونیشیا میں ہونے والی ملاقات کے ٹھیک ایک سال بعد ہو رہی ہے۔


حالیہ برسوں میں امریکہ اور چین کے تعلقات کسی حد تک کشیدہ ہیں۔ اس ملاقات میں دونوں سپر پاورز کے درمیان کشیدگی کو کم کرنے کے مقصد سے اعلیٰ سطحی سفارتی مذاکرات ہوں گے۔ جنوری 2021 میں بائیڈن کے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے دونوں رہنماؤں کے درمیان یہ صرف دوسری ذاتی ملاقات ہوگی۔وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے صحافیوں کو بتایا کہ بائیڈن کا خیال ہے کہ پیچیدہ تعلقات کو سنبھالنے کے لیے آمنے سامنے سفارت کاری کا کوئی متبادل نہیں ہے۔

واضح رہے کہ چین نے اس وقت کے امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر نینسی پیلوسی کے گزشتہ سال تائیوان کے دورے کے بعد امریکہ کے ساتھ فوجی رابطہ منقطع کر دیا تھا۔ چین تائیوان کو اپنا ہونے کا دعویٰ کرتا ہے، حالانکہ یہ جمہوری طور پر حکمرانی والا جزیرہ ہے۔ اس کے بعد یہ کشیدہ تعلقات اس وقت تلخ ہو گئے جب فروری میں امریکہ پر اڑنے والے ایک مشتبہ چینی جاسوس غبارے کو مار گرایا گیا۔


بائیڈن کے حکم کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات خراب ہو گئے تھے۔ تاہم، بائیڈن انتظامیہ کے اعلیٰ حکام نے تب سے بیجنگ کا دورہ کیا ہے اور مواصلات اور اعتماد کی بحالی کے لیے اپنے ہم منصبوں سے ملاقات کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ہم دیکھیں گے کہ سان فرانسسکو میں کیا ہوتا ہے اور صدر کی اس میٹنگ کے بعد دوبارہ رپورٹ کر سکیں گے کہ آیا ہم نے واقعی فوجی مواصلات کی بحالی میں پیش رفت کی ہے"۔

ایک سینئر امریکی اہلکار کے مطابق بائیڈن شی جن پنگ کی ملاقات میں اسرائیل حماس جنگ سے لے کر روس کے یوکرین پر حملے، شمالی کوریا کے روس کے ساتھ تعلقات، تائیوان، انڈو پیسیفک، انسانی حقوق، اقتصادیات، مصنوعی ذہانت تک کے موضوعات شامل ہوں گے۔ توقع ہے کہ تجارتی اور اقتصادی تعلقات جیسے معاملات پر ایک ساتھ بات چیت کی جائے گی۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;