کورونا وائرس: چین کے ساتھ عالمی ادارہ صحت پر بھی برسے ٹرمپ

ٹرمپ نے کہا کہ موجود عالمی ادارہ صحت نے بھی یہ دنیا کو غلط معلومات فراہم کیں کہ وائرس کی انسان سے انسان میں منتقلی کی کوئی شہادت نہیں ملتی۔

تصویر سوشل میڈیا بشکریہ نیشنل ہیرالڈ 
تصویر سوشل میڈیا بشکریہ نیشنل ہیرالڈ
user

یو این آئی

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے کل ایک مرتبہ پھر کورونا وبا کے لئے چین کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وبا کے لئے چین کو ذمے دار ٹھہراتے ہوئے چین کا احتساب کرنا چاہیے۔ ڈونالڈ ٹرمپ نے اپنے ان خیالات کا اظہار اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کے دوران کیا ۔

اپنے ریکارڈ شدہ خطاب میں مسٹر ٹرمپ نے چین پر وائرس کو اپنے ملک سے نکلنے کا موقع دینے کا الزام لگایا اور کہا کہ اس کے نتیجے میں پوری دنیا انفیکشن کا شکار ہوئی۔ اقوام متحدہ کو چین کے رخ پر اس کا احتساب کرنا چاہیے۔


انہوں نے اپنے خطاب میں چین پر الزام لگایا کیا کہ جب ووہان میں 2019 میں وائرس سامنے آیا تو چین نے صرف اپنے مفادات کے تحفظ کا خیال رکھا اورچینی حکومت یہاں تک کہ موجود عالمی ادارہ صحت نے بھی یہ دنیا کو غلط معلومات فراہم کیں کہ وائرس کی انسان سے انسان میں منتقلی کی کوئی شہادت نہیں ملی۔ مسٹر ٹڑمپ نے کہا کہ اسی پر اکتفا نہیں کیا گیا بلکہ اس کے بعد ایک اور جھوٹ یہ بولا گیا کہ جن لوگوں میں وائرس کی علامات نہیں ان سے کوئی وائرس نہیں پھیلتا۔

چین نے بہر حال امریکی انٹیلی جنس کی رپورٹ کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ چین نے وبا سے متعلق ہمیشہ ’واضح اور شفاف‘ رویہ اختیار کیا۔


مسٹرٹرمپ نے عالمی ادارہ صحت پربھی سخت نکتہ چینی کرتے ہوئے الزام لگایا تھا کہ وہ چین پر بہت زیادہ توجہ مرکوز کر تا آیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔