ملیشیا: شاہی محل کے 7 ملازم کورونا پازیٹو، سلطان اور ان کی بیگم خطرے میں!

ملیشیا میں 14 اپریل تک لاک ڈاؤن ہے اور کورونا کے انفیکشن سے اب تک 21 لوگوں کی موت واقع ہو چکی ہے۔ تقریباً 2 ہزار ایسے مریضوں کا علاج ہو رہا ہے جن کا کورونا وائرس ٹیسٹ پازیٹو آ چکا ہے۔

ملیشیا کے بادشاہ اور ان کی بیگم (تصویر سوشل میڈیا)
ملیشیا کے بادشاہ اور ان کی بیگم (تصویر سوشل میڈیا)
user

قومی آوازبیورو

ملیشیا کے بادشاہ سلطان عبداللہ عزیزالدین اور ان کی بیگم عزیزہ امینہ میمونہ اسکندریہ اس بات کا پتہ لگنے کے بعد آئسولیشن میں چلے گئے ہیں کہ ان کے شاہی محل کے سات ملازم کورونا وائرس کی زد میں ہیں۔ سلطان اور ان کی بیگم دونوں نے خود کو علیحدہ رکھنے کا فیصلہ کیا اور ساتھ ہی یہ پتہ لگانے کا حکم بھی دیا کہ شاہی محل میں موجود دیگر ملازم اور افراد اس وائرس کے شکار ہیں یا نہیں۔ ابھی تک اس بات کا پتہ نہیں چل سکا ہے کہ آخر کورونا وائرس کا انفیکشن شاہی محل تک کس طرح پہنچا۔

میڈیا ذرائع کے مطابق منگل کے روز شاہی محل کے سات ملازموں کو اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا اور ہیلتھ افسران اس بات کا پتہ لگانے کی کوشش کر رہے ہیں کہ یہ انفیکشن کس سطح تک پھیلا ہے۔ شاہی محل کے ذرائع نے جمعرات کے روز خبر دی ہے کہ ملیشیا کے بادشاہ اور ان کی بیگم کا کورونا ٹیسٹ کرایا گیا ہے اور اچھی بات یہ ہے کہ ان دونوں پر کورونا کا انفیکشن نہیں ہوا ہے۔ اس کے بعد بھی دونوں شاہی محل میں علیحدہ رہ رہے ہیں تاکہ انھیں کسی طرح کا خطرہ نہ رہے۔

شاہی محل کے ایک اہم ذمہ دار احمد فضلی کا کہنا ہے کہ بادشاہ اور ان کی بیگم نے بدھ کے روز سے ہی خود کو علیحدہ رکھنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس وقت محل کو انفیکشن سے پوری طرح پاک کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ قابل ذکر ہے کہ ملیشیا میں 14 اپریل تک لاک ڈاؤن کا اعلان کیا ہوا ہے اور کورونا کے انفیکشن سے اب تک 21 لوگوں کی موت واقع ہو چکی ہے۔ تقریباً 2 ہزار ایسے مریضوں کا علاج ہو رہا ہے جن کا کورونا وائرس ٹیسٹ پازیٹو آ چکا ہے۔ ملک میں ہر طرح کے احتیاطی اقدام بھی کیے جا رہے ہیں۔