اقوام متحدہ میں افغان نمائندہ اسحق زئی نے جنرل اسمبلی سے خطاب سے قبل نام واپس لیا

اسحق زئی کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کو اس کے 76 ویں سیشن کے آخری دن پیر کو خطاب کرنا تھا، لیکن اس سے پہلے ہی انہوں نے اپنا نام واپس لے لیا۔

افغان نمائندہ اسحق زئی
افغان نمائندہ اسحق زئی
user

یو این آئی

اقوام متحدہ: اقوام متحدہ میں افغانستان کے مستقل نمائندے غلام اسحق زئی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب سے پہلے اپنا نام واپس لے لیا۔ اسحق زئی کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کو اس کے 76 ویں سیشن کے آخری دن پیر کو خطاب کرنا تھا، لیکن اس سے پہلے ہی انہوں نے اپنا نام واپس لے لیا۔ سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیریس کے ترجمان اسٹیفن ڈوجارک نے پیر کو اس کی تصدیق کی ہے۔

پاکستانی اخبار ڈان کی رپورٹ کے مطابق اسحق زئی کا نام پیر کو خطاب کرنے والوں کی فہرست سے ہٹا دیا گیا۔ دوجارک نے کہا کہ ‘‘افغانستان نے عام بحث میں اپنی شرکت واپس لے لی ہے‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ اسحق زئی نے اپنے خطاب سے نام واپس لینے کی کوئی وجہ نہیں بتائی۔


واضح رہے کہ طالبان نے گزشتہ ہفتے اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوٹیریس کو ایک خط لکھا تھا، جس میں افغانستان کے نئے وزیر خارجہ عامر خان متقی کو اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کی کارروائی میں شرکت کی اجازت دینے کی گزارش کی گئی تھی۔ خط میں زور دے کر کہا گیا کہ اسحق زئی اب عالمی ادارے میں افغانستان کی نمائندگی نہیں کرتے ہیں۔

طالبان کی جانب سے گوٹیریس کو تحریر کئے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ طالبان نے اپنے دوحہ میں قائم دفتر کے ترجمان سہیل شاہین کو اقوام متحدہ میں افغانستان کا مستقل نمائندے کے طور پر نامزد کیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ غلام اسحق زئی افغانستان کی منتخب حکومت کے مستقل نمائندے تھے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔