روس سے آئی خوشخبری، 12 اگست کو دنیا کی پہلی کورونا ویکسین کو ملے گی منظوری!

'گیم-کووڈ-ویک لیو' نامی ویکسین کے تعلق سے روس نے دعویٰ کیا ہے کہ نہ صرف 12 اگست کو اس کا رجسٹریشن ہوگا، بلکہ ستمبر میں اس کا پروڈکشن ہوگا اور اکتوبر سے ملک بھر میں ٹیکہ کاری کا عمل شروع کر دیا جائے گا

کورونا ویکسین، تصویر سوشل میڈیا
کورونا ویکسین، تصویر سوشل میڈیا
user

تنویر

پوری دنیا میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے اثرات کے درمیان روس سے اچھی خبر یہ سامنے آئی ہے کہ بہت جلد ایک ویکسین بازار میں آنے کے لیے تیار ہے۔ روس کووِڈ-19 ویکسین کو منظوری دینے والا پہلا ملک بننے جا رہا ہے۔ روس کے نائب وزیر صحت گرڈنیو نے بتایا ہے کہ ملک 12 اگست کو کورونا وائرس کے خلاف بنائی گئی پہلی ویکسین کو رجسٹر کرے گا۔ یہ ویکسین ماسکو واقع گملیا انسٹی ٹیوٹ اور روسی وزارت دفاع نے مشترکہ طور پر مل کر بنائی ہے۔

اس ویکسین کا نام 'گیم-کووِڈ-ویک لیو' (Gam-Covid-Vac Lyo) ہے اور اس کے تعلق سے روس حکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ نہ صرف 12 اگست کو اس کا رجسٹریشن ہوگا، بلکہ ستمبر میں اس کا بڑے پیمانے پر پروڈکشن بھی شروع ہوجائے گا اور اکتوبر سے ملک بھر میں ٹیکہ کاری کا عمل شروع کر دیا جائے گا۔

یہاں قابل ذکر ہے کہ روس کے جس کورونا ویکسین کو 12 اگست کو رجسٹر کیے جانے کی بات کی جا رہی ہے، اس کے تیسرے مرحلہ کا کلینیکل ٹرائل ابھی جاری ہے۔ گویا کہ روس کورونا ویکسین جلد از جلد بازار میں لانا چاہتا ہے تاکہ حالات کو قابو میں کیا جا سکے۔ لیکن دنیا کے کئی سائنسداں کو فکر ہے کہ کہیں اوّل آنے کی دوڑ میں معاملہ الٹا نہ پڑ جائے۔ دراصل روس کے دعوے کی حمایت میں اب تک کوئی سائنسی رپورٹ شائع نہیں ہوئی ہے۔ ماسکو 'اسپوتنک' (خطہ ارض کا پہلا سیٹلائٹ) کی طرح اشتہاری جیت حاصل کرنے کی سوچ رہا ہے جو دنیا کے پہلے سیٹلائٹ کے 1957 میں سوویت یونین کے نصب کیے جانے کی یاد دلا رہا ہے۔

لیکن اس تعلق سے روسی سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ویکسین جلد اس لیے تیار کر لی گئی کیونکہ یہ پہلے سے ہی اس طرح کی دیگر بیماریوں سے لڑنے میں اہل ہے۔ یہی سوچ کئی دیگر ممالک اور کمپنیوں کی بھی ہے۔ روس کی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ روسی فوجیوں نے ہیومن ٹرائل میں والنٹیرس کی شکل میں کام کیا ہے۔ دعویٰ یہ بھی ہے کہ منصوبہ کے ڈائریکٹر الیکژنڈر گنس برگ نے خود یہ ویکسین استعمال کی ہے۔

Published: 8 Aug 2020, 3:25 PM
next