بنگلہ دیش میں پہلی بار خواتین ’فائر فائٹر‘ میں ہوئیں شامل

بنگلہ دیش فائر سروس اینڈ سول ڈیفنس (ایف ایس سی ڈی) کی تاریخ میں پہلی بار 15 خواتین کو’فائر فائٹرز‘ کے طور پر منتخب کیا گیا ہے۔ مقامی میڈیا نے ہفتہ کو یہ اطلاع دی

<div class="paragraphs"><p>یو این آئی</p></div>

یو این آئی

user

یو این آئی

ڈھاکہ: بنگلہ دیش فائر سروس اینڈ سول ڈیفنس (ایف ایس سی ڈی) کی تاریخ میں پہلی بار 15 خواتین کو’فائر فائٹرز‘ کے طور پر منتخب کیا گیا ہے۔ مقامی میڈیا نے ہفتہ کو یہ اطلاع دی۔

ڈھاکہ ٹریبیون کے مطابق، بنگلہ دیش کے وزیر داخلہ اسد الزماں خان کمال نے جمعرات کو ڈھاکہ میں ایک تقریب میں نئی ​​تعینات ہونے والی خاتون فائر فائٹرز کا خیرمقدم کیا۔ ان 15 خواتین کو، 2707 درخواست دہندگان میں سے، ابتدائی اسکریننگ، فزیکل فٹنس، میڈیکل ٹیسٹ، تحریری ٹیسٹ اور زبانی امتحان کے ذریعے فائر فائٹرز کے طور پر منتخب کیا گیا ہے۔


واضح رہے کہ انہوں نے گزشتہ ماہ ڈھاکہ کے مضافات میں پرباچل میں قائم فورس میں باضابطہ طور پر شمولیت اختیار کی تھی۔ اس سے پہلے خواتین ایف ایس سی ڈی میں بطور آفیسر کام کرتی تھیں لیکن فائر فائٹر کے عہدے پر کسی بھی خاتون کو تعینات نہیں کیا گیا۔ صنفی امتیاز کو ختم کرنے کے لیے، وزیر اعظم شیخ حسینہ کے حکم کے مطابق، حال ہی میں ملک میں ’فائر مین‘ کے عہدے کو ’فائر فائٹر‘ میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;