کیلی فورنیا نائٹ کلب میں فائرنگ، 12 ہلاک متعدد زخمی

عینی شاہدین کے مطابق مسلح شخص کی بار پر اندھا دھند فائرنگ کے بعد بھگدڑ مچ گئی اور وہاں موجود لوگ شیشے توڑ کر جانیں بچانے کے لیے بھاگنے لگے۔

واشنگٹن، 8 نومبر (یو این آئی) امریکا کی ریاست کیلی فورنیا میں ایک مسلح شخص نے ایک بار پر اندھا دھند فائرنگ کردی ہے جس کے نتیجے میں بارہ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ پولیس کی جوابی فائرنگ سے مشتبہ حملہ آور بھی مارا گیا ہے۔

فائرنگ کا یہ واقعہ بدھ کی شب مقامی وقت کے مطابق 11 بج کر 20 منٹ پر لاس اینجلس کےنزدیک واقع شہر تھوزینڈ اوکس میں پیش آیا ہے۔ عینی شاہدین کے مطابق مسلح شخص کی بار پر اندھا دھند فائرنگ کے بعد بھگدڑ مچ گئی اور وہاں موجود لوگ شیشے توڑ کر جانیں بچانے کے لیے بھاگنے لگے۔ افسران نے بعد میں تصدیق کی کہ مشتبہ حملہ آور کی بھی موت ہوگئی چکی ہے۔ افسران کے مطابق حادثے کے وقت بار میں ایک کالج کنٹری میوزک چل رہا تھا جس میں کم از کم 200 لوگ موجود تھے۔

وینٹورا کاؤنٹی کے شیرف کے مطابق فائرنگ کے وقت سیکڑوں افراد’ بار ڈر لائن بار اینڈ گرل ‘میں موجود تھے اور پولیس کی آمد کے وقت بھی فائرنگ کا سلسلہ جاری تھا۔بار کے اندر موجود متعدد افراد نے ٹی وی اسٹیشنوں کو فون کرکے بتایا ہے کہ حملہ آور سیاہ لباس میں ملبوس ایک لمبا شخص تھا اور اس نے سر پر ڈھاٹا باندھ رکھا تھا۔اس کا چہرہ بھی جزوی طور پر چھپا ہوا تھا ۔اس نے پہلے دروازے پر موجود ایک شخص پر پستول سے گولی چلائی اور اس کے بعد اندر داخل ہوکر اندھا دھند فائرنگ شروع کردی ۔

اخبار لاس اینجلس ٹائمز نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ کم سے کم 30 گولیاں فائر کی گئی ہیں۔انھوں نے بھی اس امر کی تصدیق کی ہے کہ ملزم کے پاس پستول تھا اور وہ اسی سے گولیاں چلا رہا تھا۔

عینی شاہدین نے بتایا ہے کہ لوگ بار کے چاروں کونوں میں دُبک گئے تھے اور چند لوگوں نے اسٹول اٹھا کر کھڑکیوں کے شیشے توڑ دیے اور پھر وہاں سے دسیوں افراد بھاگ جانے میں کامیاب ہوگئے۔ پولس نے بتایا کہ زخمیوں کی تعداد بڑھ سکتی ہے۔ یہ نائٹ کلب مقامی یونیورسٹی کے طلبہ میں کافی مقبول ہے۔

سب سے زیادہ مقبول