’چین کورونا وائرس کے ماخذ پر تحقیق کی اجازت دے، ورنہ...‘ امریکہ کی دھمکی

جیک سولیوان نے چین کو متنبہ کیا ہے کہ اگر اس نے کووِڈ۔19 وباء کا سبب بننے والے وائرس کے ماخذ کے بارے میں حقیقی تحقیق کی اجازت نہ دی تو اسے بین الاقوامی تنہائی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔

امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سولیوان Getty Images
امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سولیوان Getty Images
user

یو این آئی

واشنگٹن: عالمی وبا کورونا کے بارے میں پائے جانے والے شک و شبہات کے درمیان امریکہ نے چین کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر چین نے کووِڈ۔19 وائرس کے ماخذ کے بارے میں حقیقی تحقیق کی اجازت نہ دی، تو اسے بین الاقوامی تنہائی کا سامنا ہو سکتا ہے۔

امریکہ کے مشیر برائے قومی سلامتی جیک سولیوان نے چین کو متنبہ کیا ہے کہ اگر اس نے کووِڈ۔19 وباء کا سبب بننے والے وائرس کے ماخذ کے بارے میں حقیقی تحقیق کی اجازت نہ دی تو اسے بین الاقوامی تنہائی کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ امریکی میڈیا کی خبر کے مطابق سولیوان نے کہا ہے کہ اس وقت موجودہ نقطے پر ہم کسی دھمکی یا الٹی میٹم کو شائع نہیں کریں گے۔


سولیوان نے مزید کہا ہے کہ فی الحال ہم بین الاقوامی برادری سے تعاون حاصل کرنا جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ چین کے اپنی ذمہ داریوں کو پورا نہ کرنے کی صورت میں ہم جوابی کارروائی پر نظر ثانی کریں گے اور یہ سب ہم اپنے اتحادیوں کے ساتھ ہم آہنگی کے ساتھ کریں گے۔ سولیوان نے کہا ہے اگر چین وائرس کے ماخذ کی تحقیق کی اجازت نہیں دیتا تو اسے بین الاقوامی برادری میں تنہائی کا سامنا ہو سکتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔