افغان مہاجرین خسرہ کی ویکسین لینے کے 21 دن بعد امریکہ میں داخل ہو سکیں گے

امریکی بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کے مرکز (سی ڈی سی) نے بائیڈن انتظامیہ کو سفارش کی ہے کہ وہ افغان مہاجرین کو خسرہ کی ویکسینیشن کے 21 دن بعد ملک میں داخل ہونے کی اجازت دے

امریکہ کے ایک ہوائی اڈے پر پہنچے افغان پناہ گزین / Getty Images
امریکہ کے ایک ہوائی اڈے پر پہنچے افغان پناہ گزین / Getty Images
user

یو این آئی

واشنگٹن: امریکی بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کے مرکز (سی ڈی سی) نے بائیڈن انتظامیہ کو سفارش کی ہے کہ وہ افغان مہاجرین کو خسرہ کی ویکسینیشن کے 21 دن بعد ملک میں داخل ہونے کی اجازت دے۔

پولیٹیکو میگزین کی رپورٹ کے مطابق اب تک بیرون ملک امریکی فوجی اڈوں میں رہنے والے تقریبا 60 فیصد افغان شہریوں کو خسرہ سے بچاؤ کی ویکسین دی گئی ہے۔ وہیں 127 تارکین وطن کو خسرہ سے متاثر ہونے کے بعد نیو میکسیکو کے ہولومن ایئر فورس بیس پر قرنطین میں رکھا گیا ہے۔


وائٹ ہاؤس کے ترجمان جین ساکی کے مطابق امریکہ اور بیرون ملک تمام فوجی مقامات پر افغان مہاجرین کے خسرہ سے متاثر ہونے کے اب تک سات کیسز کی تصدیق ہوچکی ہے۔ 10 ستمبر کو ایسے چار کیسز سامنے آنے کے بعد امریکہ نے افغان مہاجرین کو لے جانے والی پروازوں پر پابندی لگا دی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔