کورونا کے لحاظ سے 2021 زیادہ مہلک، ہندوستان میں صورت حال تشویش ناک: عالمی ادارہ صحت

ڈبلیو ایچ او کے سربراہ نے کہا کہ ہندوستان میں کورونا کی صورت حال انتہائی خراب ہے، کئی ریاستوں میں معاملے تیزی سے بڑھ رہی ہیں، اسپتال میں بڑی تعداد میں مریض داخل ہو رہے ہیں اور اموات بھی ہو رہی ہیں

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈروس ایڈہانوم / تصویر یو این آئی
عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈروس ایڈہانوم / تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

جنیوا: ہندوستان میں کورونا کے معاملے ریکارڈ تعداد میں سامنے آ رہے ہیں اور کافی وقت سے یومیہ 3 لاکھ سے زیادہ نئے معاملوں کی تشخیص کی جا رہی ہے، جبکہ یومیہ اموات کی تعداد چار ہزار سے تجاوز کر چکی ہے۔ ہندوستان کی اس ابتر صورت حال پر عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈروس ایڈہانوم نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کی صورت حال انتہائی پریشان کن ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری دنیا کے لئے وبا کا یہ دوسرا سال زیادہ مہلک ثابت ہونے والا ہے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق، ڈبلیو ایچ او کے سربراہ نے کہا کہ ہندوستان میں کورونا کی صورت حال انتہائی خراب ہے، کئی ریاستوں میں معاملے تیزی سے بڑھ رہی ہیں، اسپتال میں بڑی تعداد میں مریض داخل ہو رہے ہیں اور بڑی تعداد میں اموات بھی واقع ہو رہی ہیں۔

عالمی ادارہ صحت کی جانب سے اطلاع فراہم کی گئی کہ ہندوستان کی کورونا کی صورت حال کا نزدیکی جائزہ لیا جا رہا ہے اور ہر ضروری امداد بروقت پہنچائی جا رہی ہے۔ بتایا گیا کہ ڈبلیو ایچ او کی مدد سے ہندوستان میں متعدد آکسیجن کنسنٹریٹر بھیجے گئے ہیں، ماسک بھجوائے گئے ہیں اور دوسرے طبی آلات کی بھی فراہمی کی جا رہی ہے۔

ڈبلیو ایچ او نے کہا کہ اس وقت ہندوستان کی صورت حال تو دھماکہ خیز ہے ہی، کئی دوسرے ممالک پر بھی کورونا کی دوسری لہر کا شدید اثر پڑا ہے۔ ہندوستان کے علاوہ نیپال، سری لنکا، ویتنام، کمبوڈیا، تھائی لینڈ اور مصر میں بھی کورونا کے معاملے تیزی سے بڑھ رہے ہیں۔ افریقہ کی صورت حال بھی تشویش ناک ہے۔ ایسے میں ان تمام ممالک کو ہر ممکن مدد دی جائے گی۔

ٹیڈروس ایڈہانوم نے کہا کہ وبا کا یہ دوسرا سال 2020 سے زیادہ مہلک ثابت ہو رہا ہے۔ ان کے بقول جتنی اموات گزشتہ سال ہوئی تھیں، اس سال اس سے زیادہ اموات واقع ہو سکتی ہیں۔

ڈبلیو ایچ او کے سربراہ کی طرف سے ویکسین سپلائی کے چیلنج پر بھی بات کی۔ انہوں نے کہا کہ ویکسین کی سپلائی پوری دنیا کے لئے ایک بڑا چیلنج ہے، نیز کورونا کے بڑھتے معاملوں کے درمیان زندگی اور روزگار دونوں کی حفاظت ناگزیر ہے۔

خیال رہے کہ ہندوستان میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 3 لاکھ 26 ہزار 123 نئے معاملوں کی تصدیق کی گئی۔ وہیں 3879 لوگوں نے اپنی جان گنوا دی۔ اعدادوشمار کے لحاظ سے ملک میں متاثرہ مریضوں کی تعداد میں گراوٹ نظر آ رہی ہے، تاہم اموات کا گراف تاحال تشویش ناک ہے۔ ہندوستان میں گزشتہ کئی دنوں تک ہر روز 4 ہزار سے زیادہ اموات واقع ہوئی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔