فیروز آباد میں وائرل و دیگر بیماریوں کی وباءمیں اضافہ

مریضوں کو داخل کرنے کے لیے بستروں کی کمی ہے جب کہ اسپتال کے احاطے میں نئی تعمیر ہونے والی 150 بستروں پر مشتمل عمارت سفید ہاتھی ثابت ہو رہی ہے۔

<div class="paragraphs"><p>فائل تصویر آئی اے این ایس</p></div>

فائل تصویر آئی اے این ایس

user

یو این آئی

اتر پردیش کے فیروز آباد ضلع میں آج کل وائرل بخار اور ڈینگو کے علاوہ مختلف قسم کی بیماریوں کا پھیلاؤ دن بہ دن بڑھتا جا رہا ہے جس کے نتیجے میں ڈسٹرکٹ ہسپتال میں مریضوں کے داخلے کے لیے بستروں کی کمی ہے۔

ضلعی اسپتال میں علاج کے لیے آنے والے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہو رہا ہے لیکن سنگین مریضوں کو داخل کرنے کے لیے بستروں کی کمی ہے جب کہ اسپتال کے احاطے میں نئی تعمیر ہونے والی 150 بستروں پر مشتمل عمارت سفید ہاتھی ثابت ہو رہی ہے۔


ضلع میں وائرل بخار ڈینگی مکمل طور پر پھیل چکا ہے۔ دیہی علاقوں کی حالت بہت خراب ہے۔ متاثرہ مریض ضلع اسپتال کی طرف بھاگ رہے ہیں جس کی وجہ سے مریضوں کی تعداد میں دن بدن اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ زیادہ تر مریضوں کو او پی ڈی میں بیٹھے ڈاکٹروں کی طرف سے دوائیں لکھ کر گھر بھیج دیا جاتا ہے جبکہ مذکورہ امراض میں مبتلا مریضوں کو سرکاری ٹروما سنٹر بھیجا جاتا ہے جہاں ڈاکٹر ان کو داخل کر کے علاج شروع کر دیتے ہیں۔

لوگوں کو ضلع اسپتال کے وارڈز میں داخل ہونے کے لیے گھنٹوں انتظار کرنا پڑتا ہے کیونکہ آن لائن سسٹم کے ذریعے بستروں کی خالی جگہ کی اطلاع ٹروما سینٹر کو دی جاتی ہے اور پھر مریضوں کو ضلع اسپتال کے وارڈوں میں بھیجا جاتا ہے۔ ضلع اسپتال میں داخل مریضوں کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ضلع اسپتال میں مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد اور بستروں کی کمی کے درمیان ضلع اسپتال کے احاطے میں ہی بنائے گئے 150 بستروں کے کام نہ ہونے پر سوالات اٹھنے لگے ہیں۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;