کورونا وائرس: جموں اور سانبہ میں پرائمری اسکول 31 مارچ تک بند

جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کنٹرول کے نوڈل افسر ڈاکٹر شفقت خان کا کہنا ہے کہ یونین ٹریٹری میں تین سو کیسوں کے نمونے جمع کیے گئے ہیں جن میں سے 27 نمونوں کو ٹیسٹ کے لئے دہلی بھیجا گیا ہے۔

 تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

جموں: جموں و کشمیر کی سرمائی راجدھانی جموں میں دو متاثرین میں کورونا وائرس کے علامات و امکانات پائے جانے کے پیش نظر انتظامیہ نے جموں اور سانبہ اضلاع کے تمام سرکاری وغیر سرکاری پرائمری اسکولوں کو ماہ رواں کی 31 تاریخ تک بند کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں۔ انتظامیہ نے جموں و کشمیر میں بائیو میٹرک حاضری نظام کو بھی 31 مارچ تک معطل کر دیا ہے۔

جموں و کشمیر انتظامیہ کے ترجمان روہت کینسل نے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ جموں میں دو مریضوں کے ٹیسٹ رپورٹس آئی ہیں جن کے مطابق ان میں کورونا وائرس ہونے کے قوی امکانات ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں متاثرین گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں میں علیحدہ وارڈ میں زیر علاج ہیں اور ان کی حالت مستحکم ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ دونوں متاثرین بغیر اجازت کے اسپتال چھوڑ کر چلے گئے تھے اب انہیں واپس لایا گیا ہے۔ انہوں نے لوگوں سے گھبرانے کے بجائے تعاون اور احتیاط کرنے کی اپیل کی ہے۔ روہت کینسل نے جموں اور سانبہ اضلاع میں تمام پرائمری اسکول 31 مارچ تک بند کرنے کے حکامات جاری کیے اور اس کے علاوہ جموں و کشمیر میں بائیو میٹرک حاضری نظام بھی ماہ رواں کی 31 معطل کردیا۔

دریں اثنا چین میں جنم لے کر دنیا میں تیزی سے پھیلنے والے کورونا وائرس کی روک تھام کے لئے انتظامیہ نے جموں و کشمیر میں محکمہ صحت کو الرٹ پر رکھا ہے۔ جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کنٹرول کے نوڈل افسر ڈاکٹر شفقت خان کا کہنا ہے کہ یونین ٹریٹری میں تین سو کیسوں کے نمونے جمع کیے گئے ہیں جن میں سے 27 نمونوں کو ٹیسٹ کے لئے دہلی بھیجا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتظامیہ جموں و کشمیر میں ایک لیبارٹری قائم کرے گی تاکہ نمونوں کو ٹیسٹ کے لیے دہلی نہ بھیجنا پڑے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔