’اے سوٹیبل بوائے‘ میں تعزیہ کی توہین پر شیعہ وقف بورڈ برہم، میرا نائر اور نیٹ فلِکس کو نوٹس

شیعہ وقف بورڈ نے ’اے سوٹیبل بوائے‘ میں تعزیہ کی توہین پر اعتراض ظاہر کرتے ہوئے میرا نائر اور نیٹ فلکس کو نوٹس بھیج کر معافی مانگنے اور قابل اعتراض مناظر ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے

تصویر ٹوئٹر
تصویر ٹوئٹر
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: آل انڈیا شعیہ پرسنل لا بورڈ نے او ٹی ٹی (اوور دی ٹاپ) پلیٹ فارم نیٹ فلِکس اور ویب سیریز ’اے سوٹیبل بوائے‘ کی تخلیق کار اور ہدایت کار میرا نائر کو تعزیہ کی توہین کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے قانونی نوٹس بھیجا ہے۔ ویب سیریز کی ایک قسط میں تعزیہ کی دانستہ طور پر توہین کی منظر کشی کی گئی ہے۔

ویب سیریز کی ایک قسط میں ایک نوجوان کی جانب سے نعزیہ کو دھکا دے کر توڑنے اور توہین کرنے کی منظر کشی کی گئی ہے۔ ہدایت کار میرا نائر کی ویب سیریز ’اے سوٹیبل بوائے‘ کو 23 اکتوبر 2020 کو نیٹ فلکس پر دستیاب کیا گیا تھا۔ اس میں معروف اداکارہ تبو نے بھی کام کیا ہے۔


ہندی روزنامہ ’دینک جاگرن‘ کی رپورٹ کے مطابق آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ کے لیگل ونگ کے اتر پردیش کے صدر سید محمد حیدر رضوی نے نوٹس کے ذریعے مطالبہ کیا ہے کہ تخلیق کار اور ہدایت کار میرا نائر اس منظر کو ویب سیریز سے ہٹا دیں اور عوامی سطح پر معافی مانگیں۔ انہوں نے کہا کہ ویب سیریز کی چوتھی قسط میں ایک سین میں جان بوجھ کر تعزیہ کی توہین کی گئی ہے۔ اس سے عوام کے جذبات مجروح ہوئے ہیں۔

آل انڈیا شیعہ پرسنل لا بورڈ کے نوٹس میں کہا گیا ہے کہ اگر اس منظر کو ہٹایا نہیں جاتا، نیز تخلیق کار اور ڈسٹری بیوٹر اس کے لیے عوامی معافی نہیں مانگتے ہیں تو ان کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعہ 295A کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ اس معاملے میں مداخلت کے نوٹس کی کاپی مرکزی اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی اور مرکزی وزیر اطلاعات انوراگ ٹھاکر کو بھی ارسال کی گئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔