مالیگاؤں کتاب میلہ فروغِ اردو کی تاریخ میں سنگ میل ثابت ہوگا: پروفیسر شیخ عقیل احمد

نئی نسل بلکہ بڑے لوگوں میں بھی موبائل سے چپکے رہنے کی بیماری عام ہوگئی ہے اس لیے ہمیں موبائل کے بجائے کتابوں کی طرف متوجہ ہونے کی ضرورت ہے۔

تصویر یو این آئی
تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

قومی اردو کونسل کے ڈائریکٹر پروفیسر شیخ عقیل احمد نے کہا کہ مالیگاؤں ایسی جگہ ہے جہاں کے لوگ اردوزبان سے جنون کی حدتک محبت کرتے ہیں جس کے لیے میں ان کا دل سے شکریہ ادا اور مبارکباد پیش کرتاہوں ،یہ بات انہوں نے قومی اردو کونسل کے 24ویں قومی اردو کتاب میلہ سے قبل پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہاکہ کونسل کی طرف سے منعقد ہونے والا یہ چوبیسواں کتاب میلہ ہے اور 2014 میں یہاں مقامی کتاب میلہ کے انعقاد کے بعد صرف سات سال بعد دوسرا میلے کا انعقاد اس لیے کیا جا رہا ہے کیونکہ مالیگاؤں کے لوگوں کو اردو سے زبردست محبت ہے ۔ اس میلے میں اسٹال بک کرنے کے لیے 300 پبلشرز نے اپلائی کیا تھا مگر جگہ کی قلت کی وجہ سے ہم صرف 163پبلشرز کو منظور کر سکے۔

شیخ عقیل نے بتایا کہ ہم چاہتے تھے کہ اس میلے کو مالیگاؤں ہی نہیں پورا مہاراشٹر یاد رکھے اور بہت سے تعلیمی و ثقافتی پروگرام کا خاکہ بنایا گیا تھا، مگر افسوس ہے کہ کورونا کی نئی قسم کے خطرات کی وجہ سے ہمیں کئی تعلیمی و ثقافتی پروگرام ملتوی کرنا پڑے۔ انہوں نے کہا کہ اس میلے میں ہم کورونا پروٹوکول کو پوری طرح فالو کریں گے، میلے میں داخلے کے لیے ماسک ضروری ہوگا، بغیر ماسک میلے میں داخلے کی اجازت نہیں ہوگی۔ ہمیں امید ہے کہ مالیگاؤں کے محبان اردو وبائی صورتحال کی رعایت کرتے ہوئے میلے سے استفادہ کریں گے۔ دیگر ہدایات پر بھی ہم عمل کریں گے اور اس سلسلے میں تمام تر احتیاطی تدابیر اختیار کریں گے۔


انہوں نے کہاکہ 24 تاریخ خواتین کے لیے خاص ہوگی اور اس میلے میں بچوں کا ہم نے خاص خیال رکھا ہے ۔ میلے کی تھیم ہی اردو کتاب اور نیوجنریشن یعنی نئی نسل ہے۔ انہوں نے کہا کہ بچوں کی کتاب سے دوری کی وجہ سے ہم نے سوچا کہ انہیں کتاب کی طرف متوجہ کیا جائے۔ ہم چاہتے ہیں کہ بچے بڑے بوڑھے سب کتاب کی طرف متوجہ ہوں کیونکہ کتاب سے اچھا ساتھی کوئی نہیں ہوتا۔ اپنی تخلیقی، علمی و ذہنی صلاحیت کے اضافے کے لیے بھی ہمیں کتاب پڑھنی چاہیے۔ میری مالیگاؤں اور تمام مہاراشٹر کے لوگوں سے اپیل ہے کہ اس کتاب میلے میں ضرور آئیں، عمدہ کتابیں خریدیں اور اپنے گھر میں چھوٹی سی لائبریری بنائیں۔ نئی نسل بلکہ بڑے لوگوں میں بھی موبائل سے چپکے رہنے کی بیماری عام ہوگئی ہے حالاں کہ موبائل بے شمار بیماریوں کا سبب ہے، اس لیے ہمیں موبائل کے بجائے کتابوں کی طرف متوجہ ہونا چاہیے۔ اچھا ادیب عالم اور تخلیق کار وہی ہو سکتا ہے، جسے کتابوں سے بہت زیادہ محبت ہو۔ لوگوں میں کتابوں سے محبت پیدا کرنے اور لائبریریوں کے احیا کے لیے ہم مختلف شہروں میں کتاب میلہ کرتے رہتے ہیں، یہ اسی سلسلے کی کڑی ہے۔ مجھے امید ہے کہ یہ میلہ فروغِ اردو اور کتابوں سے تعلق پیدا کرنے کے حوالے سے ایک اہم سنگِ میل ثابت ہوگا۔

شیخ عقیل نے کہا کہ وہ میڈیا نمایندگان کے ذریعے تمام مالیگاؤں اور مہاراشٹر کے محبان اردو سے اپیل کرتے ہیں کہ اس میلے میں آئیں اور اپنے بچوں کو بھی ساتھ لائیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ مقامی تنظیموں خصوصا مالیگاؤں سوسائٹی آف ایجوکیشن اور دیگر ان تمام ادبی و سماجی تنظیموں کا کونسل کی طرف سے خصوصی شکریہ ادا کرتے ہیں جن کے اشتراک و تعاون سے یہ میلہ منعقد کیا جا رہا ہے۔


واضح رہے کہ قومی کونسل کے زیر اہتمام لیگاؤں سوسائٹی آف ایجوکیشن، جے اے ٹی کالج فار ویمن مالیگاؤں، سٹی کالج مالیگاؤں، انجمن ترقی تعلیم، انجمن محبانِ اردو کتب کے اشتراک و تعاون سے نیو سٹی کالج و اے ٹی ٹی ہائی اسکول مالیگاؤں میں 18 تا 26 دسمبر کومنعقد ہورہا ہے۔اس موقعے پر مالیگاؤں سوسائٹی آف ایجوکیشن کے صدر جناب یسین درگاہی، امتیاز خلیل، قومی کونسل سے محمد احمد، جناب اجمل سعید، افضل حسین خان وغیرہ موجود تھے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔