ابھی اسکول نہیں کھولے گئے تو نئی نسل علم کی کمی کا سامنا کرے گی: منیش سسودیا

دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر تعلیم منیش سسودیا نے کہا، اگر ہم نے فوری طور پر اسکول نہیں کھولے تو ایک پوری نسل علم کی کمی کے ساتھ آگے بڑھے گی

دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ منیش سسودیا
دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ منیش سسودیا
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: ملک بھر میں کورونا کے بحران میں کمی آنے کے بعد پنجاب، بہار، مدھیہ پردیش، جھارکھنڈ، مہاراشٹر، چھتیس گڑھ، اتراکھنڈ جیسی ریاستوں میں اسکولوں کو کھول دیا گیا ہے۔ دہلی حکومت نے بھی کورونا وبا کے پھیلاؤ کے بعد سے بند پڑے اسکولوں کو کھولنے کا فیصلہ کیا ہے اور سب سے پہلے 9ویں اور 12ویں تک کی جماعتوں میں درس و تدریس کا عمل شروع ہو گیا ہے۔

دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر تعلیم منیش سسودیا نے کہا، ’’اگر ہم نے فوری طور پر اسکول نہیں کھولے تو ایک پوری نسل علم کی کمی کے ساتھ آگے بڑھے گی۔ جب ہم نے عوامی رائے طلب کی تو 70 فیصد افراد نے شدت سے اس خواہش کا اظہار کیا کہ اسکولوں کو کھول دیا جائے۔‘‘


انہوں نے کہا کہ فی الحال کچھ کورسز کے تعلق سے درس و تدریس نہیں ہوگی بلکہ بچوں سے مکالمہ کیا جائے گا۔ طبی ماہرین نے مشورہ دیا ہے کہ آپ چاہیں تو پرائمری اسکولوں کو کھولا جا سکتا ہے لیکن ہم نے فی الوقت انہیں نہیں کھولا ہے، سوچا کہ پہلے بڑی جماعتوں سے شروعات کرتے ہیں۔ سسودیا نے کہا کہ اسکول کھلونے کے سلسلہ میں باقی ماندہ ریاستوں کے تجربات بھی خوش آئند ہیں۔

سسودیا نے کہا کہ اگرچہ اسکول کھولے جانے کا فیصلہ جوکھم بھرا ہے لیکن پڑھائی کے نقصان کا جوکھم اس سے بھی زیادہ ہے۔ والدین بچوں کو ضروری ہدایت دے کر اسکول بھیجیں۔ ابھی 9 تا 12 جماعتوں کے بچوں کے لئے اسکول کھولے جا رہے ہیں بعد میں دیگر جماعتوں کے لئے بھی فیصلہ لیا جائے گا۔


خیال رہے کہ دہلی میں کورونا کے معاملوں میں کمی واقع ہوئی ہے اور یومیہ 50 سے بھی کم کیسز رپورٹ ہو رہے ہیں۔ کورونا کے فعال کیسز کی تعداد بھی 500 سے کم ہو گئی ہے۔ اس کے پیش نظر مرکزی حکومت نے ریاستوں سے کہا ہے کہ اسکولوں میں ٹیچنگ اور نان ٹیچنگ اسٹاف کی ٹیکہ کاری کے لئے ضلع سطح پر حکمت عملی تیار کریں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔