فیض کی نظمیں ہٹانے کے بعد ’این سی ای آر ٹی‘ کا ایک اور فیصلہ، گجرات فسادات سے متعلق باب کو ہٹایا

گجرات فسادات سے متعلق باب کو ہٹان ے کے علاوہ این سی ای آر ٹی نے سرد جنگ اور مغل درباروں پر لکھے ابواب کو بھی ہٹا دیا ہے

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: نیشنل کونسل آف ایجوکیشنل ریسرچ اینڈ ٹریننگ (این سی ای آر ٹی) نے 2002 کے گجرات فسادات سے متعلق باب کو اپنی 12ویں جماعت کی نصابی کتابوں سے ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس کے علاوہ سرد جنگ اور مغل درباروں پر لکھے ابواب کو بھی ہٹا دیا گیا ہے۔ این سی ای آر ٹی کے مطابق فسادات کے ساتھ ساتھ کتاب سے نکسل تحریک کی تاریخ اور ایمرجنسی تنازعہ کو بھی ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

این سی ای آر ٹی نے اس کی وجہ بھی بتائی ہے۔ کونسل کا کہنا ہے کہ کورونا وبا کے بعد طلبہ کے نصاب میں مناسب تخفیف کے لئے یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔ این سی ای آر ٹی کے مطابق، کووڈ کی وبا کے پیش نظر طلبہ کے نصاب کو کم کرنے کے لیے کچھ اہم اقدامات کیے گئے ہیں اور اس کے تحت کلاس 6 سے 12 کے نصاب میں تبدیلی کی گئی ہے۔


این سی ای آر ٹی نے اس کی وجہ بھی بتائی ہے۔ کونسل کا کہنا ہے کہ کورونا وبا کے بعد طلبہ کے نصاب میں مناسب تخفیف کے لئے یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔ این سی ای آر ٹی کے مطابق، کووڈ کی وبا کے پیش نظر طلبہ کے نصاب کو کم کرنے کے لیے کچھ اہم اقدامات کیے گئے ہیں اور اس کے تحت کلاس 6 سے 12 کے نصاب میں تبدیلی کی گئی ہے۔

اس سے قبل سی بی ایس ای بورڈ نے کلاس 9، 10، 11 اور 12 کے نئے نصاب کا اعلان کیا تھا۔ نصاب میں کی گئی تبدیلیوں کے تحت دسویں جماعت کے سوشل سائنس کے سلیبس سے اردو کے شاعر فیض احمد فیض کی نظموں کو نکال دیا گیا ہے۔ CBSE نے 11ویں جماعت کی کتاب سے 'سینٹرل اسلامک لینڈز' کے باب کو ہٹا دیا ہے، جو اسلام کے قیام، عروج اور پھیلاؤ کی کہانی بیان کرتا ہے۔ ساتھ ہی 12ویں جماعت کی کتاب سے مغلیہ سلطنت سے متعلق نصاب میں تبدیلیاں کی گئی ہیں۔

CBSE کلاس 10، 12 کا نظر ثانی شدہ نصاب سرکاری ویب سائٹ پر دستیاب ہے۔ سی بی ایس ای سے منسلک اسکولوں کے کچھ اساتذہ نے اطلاع دی ہے کہ بورڈ نے نصاب سے کچھ ابواب اور یونٹس کو ہٹا دیا ہے۔ اسی طرح کچھ حصہ جو پہلے ہٹا دیا گیا تھا واپس شامل کیا جاتا ہے۔ دسویں جماعت کی کتاب 'جمہوری سیاست' کے صفحہ 46، 48، 49 پر موجود تصاویر کو نصاب سے ہٹا دیا گیا ہے۔ ان میں دو پوسٹرز اور ایک سیاسی کارٹون شامل ہیں۔ اس کتاب میں 'مذہب، فرقہ واریت اور سیاست' کے تحت فرقہ واریت میں سیاست کے کردار کی وضاحت کے لیے تین کارٹون دیے گئے تھے۔ دو کارٹونوں میں فیض کے گیت بھی تھے۔

قابل ذکر ہے کہ سینٹرل یونیورسٹی کا داخلہ ٹیسٹ (CUET) بھی بارہویں جماعت کے نصاب کی بنیاد پر کالجوں میں انڈرگریجویٹ کورسز کے لیے لیا جائے گا۔ کسی بھی دوسری کلاس کے نصاب کی بنیاد پر کالجوں میں داخلے کے لیے انٹری ٹیسٹ میں کوئی سوال نہیں پوچھا جائے گا۔ داخلہ امتحان میں حاصل کردہ نمبروں کی بنیاد پر کیا جائے گا۔

इससे पहले सीबीएसई बोर्ड ने कक्षा 9, 10, 11 और 12 के लिए नया सिलेबस घोषित किया था। सिलेबस में किए गए बदलाव के तहत दसवीं के सामाजिक विज्ञान के पाठ्यक्रम से उर्दू शायर फैज अहमद फैज की नज्मों को हटा दिया गया है। सीबीएसई ने कक्षा 11 वीं की पुस्तक से इस्लाम की स्थापना, उसके उदय और विस्तार की कहानी बताने वाले अध्याय 'सेंट्रल इस्लामिक लैंड्स' को हटाया है। वहीं 12वीं कक्षा की पुस्तक से मुगल साम्राज्य से जुड़े पाठ्यक्रम में बदलाव किया गया है।

सीबीएसई कक्षा 10, 12 का संशोधित पाठ्यक्रम आधिकारिक वेबसाइट पर उपलब्ध है। सीबीएसई से संबंधित स्कूलों के कुछ शिक्षकों ने बताया कि बोर्ड ने सिलेबस में से कुछ अध्याय और इकाइयों को हटा दिया है। इसी तरह पहले हटाए गए कुछ हिस्सा को वापस जोड़ दिया गया है। दसवीं कक्षा की पुस्तक 'लोकतांत्रिक राजनीति' की पृष्ठ संख्या 46,48, 49 पर मौजूद तस्वीरों को सिलेबस से हटाया गया था। इनमें दो पोस्टर और एक पॉलिटिकल कार्टून है। इस पुस्तक में 'धर्म, सांप्रदायिकता और राजनीति' के अंतर्गत सांप्रदायिकता में राजनीति की भूमिका समझाने के लिए तीन कार्टून दिए थे। यहां दो कार्टून में फैज की नज्में भी थीं।

गौरतलब है कि कॉलेजों में अंडर ग्रेजुएट पाठ्यक्रमों हेतु बारहवीं कक्षा के सिलेबस के आधार पर ही सेंट्रल यूनिवर्सिटी एंट्रेंस टेस्ट (सीयूईटी) भी लिया जाएगा। कॉलेजों में दाखिले के लिए अन्य किसी कक्षा के सिलेबस के आधार पर एंट्रेंस टेस्ट में प्रश्न नहीं पूछे जाएंगे। परीक्षा में हासिल किए गए अंको की मैरिट के आधार पर दाखिले होंगे।

-

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔