اسرائیل غزہ پٹی میں بفر زون بنا رہا ہے، ماہرین

ماہرین کے مطابق غزہ کے سرحدی علاقوں میں بسنے والے افراد کی بے گھری جنگ کے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کے زمرے میں آ سکتی ہے۔

اسرائیل غزہ پٹی میں بفر زون بنا رہا ہے، ماہرین
اسرائیل غزہ پٹی میں بفر زون بنا رہا ہے، ماہرین
user

Dw

ماہرین نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا ہے کہ اسرائیل منظم انداز سے عمارات تباہ کر کے غزہ پٹی اور اسرائیل کے درمیان ایک بفرزون بنانے کی کوشش میں مصروف ہے، جس کا نقصان عام فلسطینی شہریوں کو ہو گا۔اسرائیل نے عوامی سطح پر اس منصوبے کی تصدیق تو نہیں کی، تاہم لگتا یہ ہے کہ وہ غزہ پٹی جو پہلے ہی ایک نہایت چھوٹا سا اور بہت گنجان آباد علاقہ ہے، اس کا کچھ حصہ فلسطینی علاقے اور اسرائیل کے درمیان بفر زون کے لیے استعمال میں لایا جانا ہے۔ اسرائیل کے اتحادی کئی ممالک اسرائیل کو متعدد مرتبہ خبردار کر چکے ہیں کہ وہ غزہ پٹی کے علاقے پر قبضے سے باز رہے۔

سات اکتوبر کو اسرائیل پر عسکریت پسند گروہ حماس کے حملے کے بعد اسرائیلی فورسز نے غزہ میں ایک بڑے عسکری آپریشن کا آغاز کیا تھا۔ یروشلم کی عبرانی یونیورسٹی کے پروفیسر ادی بین نون کے مطابق اسرائیلی فوج نے ایک خاص طریقے سے غزہ پٹی کے سرحدی علاقے میں صفر اعشاریہ چھ میل (تقریباﹰ ایک کلومیٹر) کے علاقے میں عمارات کو تباہ کیا ہے۔ سیٹلائٹ تصاویر کا معائنہ کرنے والے اس اسرائیلی پروفیسر کے مطابق اس سرحدی علاقے کو ایک طرح سے بفر زون کے طور پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔


انہوں نے بتایا کہ اس جنگ میں غزہ پٹی میں مجموعی عمارات کا تقریبا تیس فیصد تباہ ہو چکا ہے۔ گزشتہ ماہ اسرائیلی فوج نے غزہ پٹی کے قریب واقع اسرائیلی شہریوں کی 'محفوظ واپسی‘ کے لیے آپریشن کا اعلان کیا تھا۔ ایک فوجی بیان میں کہا گیا تھا کہ اس عسکری آپریشن کا مقصد اسرائیلی آبادی کو غزہ سے دور کرنا ہے۔ اس آپریشن میں اسرائیلی فوج نے اپنے اکیس اہلکاروں کی ہلاکت کا بھی بتایا تھا۔

فوجی بیان میں کہا گیا تھا کہ اہلکاروں نے غزہ اور اسرائیل کے درمیان سرحدی علاقے میں دھماکا خیز مواد کے ذریعے عمارات کو تباہ کیا جب کہ اس دوران ان پر عسکریت پسندوں کی جانب سے فائرنگ بھی کی گئی۔ ماہرین کے مطابق غزہ کے سرحدی علاقوں میں بسنے والے افراد کی بے گھری جنگ کے عالمی قوانین کی خلاف ورزی کے زمرے میں آ سکتی ہے۔ ہیومن رائٹس واچ کی مہاجرین کے حقوق سے متعلق ماہر نادیہ ہیرڈمن کے مطابق، ''ہمارے پاس ایسے شواہد بڑھتے جا رہے ہیں، جن سے لگتا ہے کہ اسرائیل غزہ کے بڑے حصے کو ناقابل رہائش بنا رہا ہے۔‘‘


ان کا مزید کہنا تھا، ''لگتا یوں ہے جیسے ممکنہ طور پر ایک بفر زون قائم کیا جا رہا ہے۔ یہ عمل جنگی جرمکے زمرے میں آ سکتا ہے۔‘‘ خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق اس معاملے پر اسرائیلی فوج نے تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;