سُروں کا ایک عہد تمام ہوا

سُروں کی ملکہ، اپنی آواز کے جادو میں کئی نسلوں کو گرفتار رکھنے والی گلوکارہ اور بھارت کی عظیم ثقافتی پہچان لتا منگیشکر ہمارے درمیان نہیں رہیں۔

سُروں کا ایک عہد تمام ہوا
سُروں کا ایک عہد تمام ہوا
user

Dw

لتا منگیشکر کی عمر 92 برس تھی۔ کووڈ انیس کی انفیکشن کا شکار ہونے کے بعد وہ 11 جنوری سے ہسپتال میں داخل تھیں۔ ممبئی کے بریچ کینڈی ہسپتال میں لتا منگیشکر کا علاج کرنے والے ڈاکٹر پرتیت سمدانی کے مطابق لتا منگیشکر کا انتقال کل اتوار چھ فروری کی صبح ''ملٹی پل آرگن فیلیئر‘‘ کے سبب ہوا اور یہ کہ وہ گزشتہ 28 دنوں سے اس ہسپتال میں زیر علاج تھیں۔

'آواز جو خدا کا ایک انعام تھی‘

لتا منگیشکر کی آواز کئی دہائیوں تک ریڈیائی لہروں، ٹیلی ویژن اسکرینوں اور سنیما ہالوں میں اپنے پرستاروں کو مسحور کرتی رہی اور کرتی رہے گی۔ ان کی آواز ہر عمر کے افراد کے لیے یکساں کشش رکھتی تھی۔


تقسیم برصغیر سے قبل 1929ء میں بھارت میں پیدا ہونے والی لتا منگیشکر نے کم عمری میں ہی گلوکاری کا آغاز کر دیا تھا۔ اپنے 73 سالوں پر محیط کیریئر میں انہوں نے 15 ہزار سے زائد گانے 36 مختلف زبانوں میں گائے۔

لتا منگیشکر نے ایک مرتبہ ایک انٹرویو کے دوران کہا تھا، ''میری آواز خدا کی طرف سے ایک انعام ہے۔ میں نے اپنی آواز کے ذریعے جذبات کا مظاہرہ کرنا سیکھا۔ جب میں ایک لوری گاتی ہوں تو میں ایک ماں بن جاتی ہوں، جب ایک رومانوی نغمہ ہو تو میں ایک عاشق ہوتی ہوں۔‘‘


2019ء میں لتا منگیشکر کی 90ویں سالگرہ کے موقع پر بھارت کے لیجنڈ اداکار امیتابھ بچن نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں ان سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا تھا، ''آپ کی آواز کے بغیر موسیقی ادھوری ہے۔ یہ رِشیوں (درویشوں) کا کام کر چکی ہے۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔