ٹیم انڈیا کا ون ڈے میں بھی شاندار فارم برقرار رکھنے کا عزم

ہندوستانی ٹیم نے ٹوئنٹی 20 سیریز میں شاندار مظاہرہ کیا، سیریز میں نوجوان کھلاڑیوں کی کارکردگی قابل تعریف رہی جس کے بعد امید کی جا رہی ہے کہ ہندوستانی ٹیم ون ڈے سیریز میں بھی کامیابی حاصل کرے گی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

گیانا: وراٹ کوہلی کی کپتانی والی ٹیم انڈیا ٹوئنٹی 20 سیریز میں ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ۔صفر سے کلین سویپ کرنے کے بعد جمعرات سے شروع ہو رہی تین میچوں کی ون ڈے سیریز میں بھی اپنی شاندار فارم کو برقرار رکھنے کی کوشش کرے گی۔

ہندوستانی ٹیم نے ٹوئنٹی 20 سیریز میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور تینوں میچ آسانی سے جیت لئے۔ اس سیریز میں نوجوان کھلاڑیوں کی کارکردگی قابل تعریف رہی جس کے بعد امید کی جا رہی ہے کہ ہندوستانی ٹیم ون ڈے سیریز میں بھی کامیابی حاصل کرے گی۔

دونوں ٹیموں کے درمیان لیگ میچ میں ہندوستان نے 125 رنز سے کامیابی حاصل کی۔ ہندوستان نے سات وکٹ پر 268 رن کا مضبوط اسکور بنانے کے بعد ویسٹ انڈیز کو صرف 143 رنز پر سمیٹ دیا تھا۔

ٹوئنٹی 20 سیریز میں تیز گیند باز نوديپ سینی، آل راؤنڈر كرنال پانڈیا اور فاسٹ بولردیپک چاهر کی کارکردگی اچھی رہی۔ پانڈیا کو مین آف دی سیریز کا ایوارڈ ملا جبکہ دیپک چاهر آخری میچ میں اپنے تین وکٹ کی بدولت مین آف دی میچ بنے۔ آخری میچ میں نوجوان وکٹ کیپر بلے باز رشبھ پنت نے ناٹ آؤٹ نصف سنچری اننگز کھیلی اور اپنی صلاحیت کو ثابت کیا۔

ہندوستان کے پاس اب ون ڈے سیریز میں بھی اسی کارکردگی کو دوہرانے کا موقع ہے۔ اگرچہ دیپک چاهر اور راہل چاهر برادران اور پانڈیا ون ڈے سیریز کا حصہ نہیں ہوں گے لیکن نوديپ ون ڈے ٹیم میں برقرار ہیں۔ ون ڈے سیریز میں ہندوستان کے دونوں تجربہ کار اسپنر يجویندر چہل اور کلدیپ یادو کھیلنے اتریں گے جو ٹوئنٹی 20 ٹیم کا حصہ نہیں تھے۔

نوجوان بلے باز شريس ایئر کو ٹوئنٹی 20 سیریز میں ایک بھی میچ کھیلنے کا موقع نہیں مل پایا تھا اور لوکیش راہل سلامی بلے باز روہت شرما کو آرام دیئے جانے کے بعد آخری میچ میں کھیلے تھے۔ ون ڈے سیریز میں تیز گیند بازمحمد شامی اور آل راؤنڈر کیدار جادھو بھی کھیلنے اتریں گے۔ یہ دونوں کھلاڑی بھی ٹوئنٹی 20 سیریز کا حصہ نہیں تھے۔

ون ڈے میں روہت شرما اور شکھر دھون اوپننگ کی ذمہ داری سنبھالیں گے جبکہ وراٹ تیسرے نمبر پر رہیں گے۔ چوتھے نمبر کے لئے پنت نے گزشتہ میچ میں ناٹ آوٹ نصف سنچری بنا کر اپنا دعویٰ مضبوط کر لیا ہے۔ پانچویں اور چھٹے نمبر کے لئے کیدار جادھو، شريس ایر، لوکیش راہل اور منیش پانڈے کے درمیان مقابلہ رہے گا۔

آل راؤنڈر کا مقام رویندر جڈیجہ کے نام رہے گا جبکہ تیز گیند بازی میں بھونیشور کمار، نوديپ سینی، محمد شامی اور خلیل احمد میں مقابلہ رہے گا۔ اسپن کا ذمہ چہل اور کلدیپ سنبھالیں گے اگرچہ ان دونوں اسپنروں نے عالمی کپ میں توقعات کے مطابق کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کیا تھا۔

ہندوستان سے ٹوئنٹی 20 سیریز میں شکست کھانے کے بعد ویسٹ انڈیز کپتان جیسن ہولڈر کی رہنمائی میں واپس کرنے کی کوشش کرے گی ۔ ٹوئنٹی 20 میں كارلاوس بریتھویٹ ٹیم کی قیادت صحیح طریقہ سے نہیں کر سکے تھے۔ ون ڈے میں کرس گیل کی موجودگی سے ٹیم کا حوصلہ بلند ہو جائے گا جو حال ہی میں کینیڈا کی گلوبل ٹی -20 لیگ میں زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کر چکے ہیں۔

نوجوان بلے باز شائی ہوپ، آل راؤنڈر روسٹن چیز، تیز گیند باز شلٹن كروٹریل ٹیم کے اہم بلے باز ہیں جبکہ کیمار روچ کے رہنے سے ٹیم کا تیز گیند بازی حملہ مضبوط ہوگا۔ ویسٹ انڈیز کی ون ڈے ٹیم اس کی ٹی -20 ٹیم کے مقابلے کہیں بہتر نظر آرہی ہے۔ ہندوستان نے ویسٹ انڈیز سے اب تک 127 ون ڈے کھیلے ہیں جن میں سے اس نے 60 میں جیت، 62 میں شکست جبکہ دو ڈرا رہے ہیں اور تین میں کوئی نتائج نہیں نکلا ہے۔