سنجوسیمسن ٹی-20 سیریز میں شکھر دھون کی جگہ ٹیم میں شامل

بنگلہ دیش کے خلاف بھی سنجو کو ٹی-20 ٹیم میں جگہ ملی تھی لیکن انہیں کوئی میچ کھیلنے کا موقع نہیں مل سکا تھا۔ حالانکہ سلامی بلے باز شکھر کی چوٹ کے بعد انہیں ویسٹ انڈیز سیریز کے لیے ٹیم میں جگہ مل گئی ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

نئی دہلی: سلامی بلے باز شکھر دھون کی جگہ نوجوان کھلاڑی سنجو سیمسن کو 6 دسمبر سے ویسٹ انڈیز کے خلاف تین ٹوئنٹی 20 میچوں کی سیریز کے لیے ہندوستانی ٹیم میں شامل کیا گیا ہے۔ بنگلہ دیش کے خلاف بھی سنجو کو ٹی -20 ٹیم میں جگہ ملی تھی لیکن انہیں ایک بھی میچ میں کھیلنے کا موقع نہیں مل سکا تھا۔ اگرچہ سلامی بلے باز شکھر دھون کی چوٹ کے بعد انہیں ویسٹ انڈیز سیریز کے لیے ٹیم میں جگہ ملی گئی ہے۔ دھون کو گزشتہ ہفتے گھریلو ٹی -20 ٹورنامنٹ سید مشتاق علی ٹرافی کے مہاراشٹر اور دہلی کے میچ کے دوران بائیں پاؤں میں چوٹ لگ گئی تھی اور ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) کی طبی ٹیم کے مطابق دھون کے گھٹنے پر سنگین چوٹ لگی ہے۔

بی سی سی آئی نے جاری بیان میں کہا، "دھون کے پیر میں چوٹ لگی ہے اور ان کو ٹانکے لگے ہیں اور وہ اس سےابھی ٹھیک نہیں ہوئے ہیں۔ ان کی چوٹ کو ٹھیک ہونے میں ابھی وقت لگے گا۔ "دھون کی غیر موجودگی میں ممکن ہے کہ ہندوستان لوکیش راہل کو روہت شرما کے ساتھ اوپنگ میں اتارے۔ راہل کا کرناٹک کے لیے مشتاق علی میں اچھی کارکردگی رہی ہے اور چھ اننگز میں انہوں نے 145.16 کے اسٹرائک ریٹ سے 225 رن بنائے ہیں۔ انہوں نے پنجاب کے خلاف 84 رن کی بڑی اننگز کھیلی تھی۔

سنجو نے مشتاق علی میں اپنی ٹیم کیرالہ کی جانب سے چھ میچ کھیلے ہیں لیکن ان کی گھریلو ٹورنامنٹ میں کارکردگی تسلی بخش نہیں رہی اور وہ ایک ہی نصف سنچری اننگز کھیل سکے ہیں۔ اس سے پہلے انہوں نے وجے ہزارے میں ناٹ آوٹ 212 رن کی ٹورنامنٹ کی تاریخ کی سب سے بڑی ذاتی اننگز کھیلی تھی۔ یہ ان کی لسٹ اے کرکٹ میں پہلی سنچری تھی جس کی بدولت انہیں قومی ٹیم میں واپسی کا موقع ملا ہے۔

سنجو نے سال 2015 میں زمبابوے کی جانب سے ہندوستان کی ٹوئنٹی 20 ٹیم میں کھیلا تھا۔ انہیں راجستھان رائلس کے تالے گاؤں میں مقامی کھلاڑیوں کے لئے منعقد كنڈشنگ کیمپ میں حصہ لینا تھا۔ وہ مشتاق علی میں کھیلنے کے بعد اپنے کوچ بیجو جارج کی رہنمائی میں فی الحال ٹریننگ کر رہے ہیں۔ جارج ہندوستانی خاتون ٹیم کے سابق فیلڈنگ کوچ رہے چکے ہیں۔

اس دوران وکٹ کیپر ردھمان ساہا کی گزشتہ روز ممبئی میں انگلی کی سرجری ہوئی تھی۔ 35 سالہ ساہا نے ہندوستان کے بنگلہ دیش کے خلاف تاریخی گلابی گیند ٹیسٹ میں کمال کی وکٹ کيپنگ کی تھی۔ لیکن سیریز کے بعد اسکین میں ان کی بائیں انگلی میں فریکچر کی تصدیق ہوئی ہے۔

بی سی سی آئی کے مطابق ساہا کی سرجری کامیاب رہی ہے اور وہ بنگلور کے نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں ری ہیبلیٹیشن کریں گے لیکن یہ واضح نہیں ہے کہ انہیں پوری طرح ٹھیک ہونے میں کتنا وقت لگے گا۔ ہندوستانی ٹیم کو فروری میں نیوزی لینڈ کے دورے پر جانا ہے۔ ویسٹ انڈیز کے خلاف ہندوستان ٹی -20 ٹیم اس طرح ہے-وراٹ کوہلی (کپتان)، روہت شرما (نائب کپتان)، لوکیش راہل، شريس ایر، منیش پانڈے، رشبھ پنت (وکٹ کیپر)، شوم دوبے، واشنگٹن سندر، رویندر جڈیجہ، يجویندر چہل، کلدیپ یادو، دیپک چاهر، محمد سمیع، بھونیشور کمار، سنجو سیمسن۔