پِنک بال ٹیسٹ: وراٹ کی 27 ویں سنچری، ٹیم انڈیا کا 347 رن پر اننگز ختم کرنے کا اعلان

ہندستان نے دوسرے دن تین وکٹ پر 174 رن سے آگے کھیلنا شروع کیا تھا۔ وراٹ نے 59 رنز اور نائب کپتان اجنکیا رہانے نے 23 رن سے اپنی اننگز کو آگے بڑھایا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

کولکاتا: کپتان وراٹ کوہلی (136 رن) کی 27 ویں سنچری کی بدولت دنیا کی نمبر ایک ٹیم ہندستان نے بنگلہ دیش کے خلاف تاریخی ڈے نائٹ ٹیسٹ کے دوسرے دن ہفتہ کو اپنی پہلی اننگز کو نو وکٹ پر 347 رن بنا کر ختم کرنے کا اعلان کر دیا۔ ہندستان کو پہلی اننگز میں اس طرح 241 رنز کی بڑی برتری ملی۔ بنگلہ دیش نے اپنی پہلی اننگز میں 106 رن بنائے تھے۔ ہندستان نے دوسرے دن تین وکٹ پر 174 رن سے آگے کھیلنا شروع کیا تھا۔ وراٹ نے 59 رنز اور نائب کپتان اجنکیا رہانے نے 23 رن سے اپنی اننگز کو آگے بڑھایا۔

وراٹ نے 194 گیندوں پر 18 چوکوں کی مدد سے 136 رن بنائے۔ وراٹ کے کیریئر کی یہ 27 ویں ٹسٹ سنچری تھی اور اس کے ساتھ ہی سب سے زیادہ سنچری بنانے والے بلے بازوں کی فہرست میں مشترکہ طور پر 17 ویں مقام پر آ گئے۔ رہانے نے 51 رن بنائے۔ اس کے بعد بنگلہ دیشی گیند بازوں نے اچھی واپسی کی اور ہندستان کی وکٹ حاصل کیں۔ہندستان کا اسکور 89.4 اوور میں جب نو وکٹ پر 347 رن تھا تو وراٹ نے ہندستان کی اننگز کا اعلان کر دیا۔ رویندر جڈیجہ نے 12 اور وکٹ کیپر ردھمان ساہا نے 17 رن بنائے۔ محمد سمیع 10 رنز پر ناٹ آؤٹ رہے۔ہندستانی ٹیم نے لنچ تک 76 اوور میں چار وکٹوں کے نقصان پر 289 رن بنائے تھے۔ وراٹ اور رہانے نے چوتھے وکٹ کے لئے 99 رن کی ساجھےداری کی۔ رہانے نے 69 گیندوں میں سات چوکے لگا کر 51 رنز کی نصف سنچری اننگز کھیلی اور اپنے ٹیسٹ کیریئر کی 22 ویں نصف سنچری بنائی۔

تازہ ترین اطلاعات کے مطابق بنگلہ دیش نے اپنی دوسری اننگ میں 100 رن سے پہلے ہی چار وکٹ کھو دئے ہیں۔
تازہ ترین اطلاعات کے مطابق بنگلہ دیش نے اپنی دوسری اننگ میں 100 رن سے پہلے ہی چار وکٹ کھو دئے ہیں۔

رہانے کو تاج الاسلام نے عبادت حسین کے ہاتھوں کیچ کراکر بنگلہ دیش کے لیے دن کا پہلا اور ہندستانی اننگز کو چوتھا وکٹ نکالا۔ حالانکہ اس کے بعد لنچ تک بنگلہ دیش کو کوئی اور کامیابی نہیں ملی اور کپتان وراٹ لنچ تک 130 رنز بنا چکے تھے۔ انہوں نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی 27 ویں سنچری مکمل کی اور تاریخی گلابی گیند ٹیسٹ کو اپنی سنچری سے یادگار بنا دیا۔وراٹ نے آل راؤنڈر رویندر جڈیجہ کے ساتھ مل کر پانچویں وکٹ کے لئے 53 رن کی ساجھےداری کی۔ لنچ کے بعد جڈیجہ سب سے پہلے آؤٹ ہوئے جنہیں ابو زید نے ایل بی ڈبلیو کیا۔ جڈیجہ کا وکٹ 289 کے اسکور پر گرا اور ہندستانی اننگز کے 300 رنز پورے ہونے کے کچھ دیر بعد ہی وراٹ بھی پویلین لوٹ گئے۔ عبادت حسین نے وراٹ کو تاج الاسلام کے ہاتھوں کیچ کرایا۔

اس کے بعد ہندستان کے وکٹ برابر گرتے رہے۔ امام امین نے روی چندرن اشون (9) اور ایشانت شرما (0) کے وکٹ لئے جبکہ زید نے ایشانت کو اکاؤنٹ نہیں کھولنے دیا۔ وراٹ نے دوسرے سیشن میں ہندستانی اننگز کا اعلان کیا۔ ساہا 41 گیندوں میں دو چوکوں کی مدد سے 17 رنز اور سمیع پانچ گیندوں میں ایک چوکے اور ایک چھکے کے سہارے 10 رن بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔ امام امین نے 85 رن پر تین وکٹ، عبادت نے 91 رن پر تین وکٹ اور زید نے 77 رن پر دو وکٹ لئے۔