ہندوستان کی انڈر 19 ٹیم کے لئے پانچویں مرتبہ خطاب اپنے نام کرنے کا موقع

چار مرتبہ کی چیمپئن انڈیا پہلی بار خطابی مقابلے میں پہنچی بنگلہ دیش ٹیم کے خلاف انڈر -19 عالمی کپ ٹورنامنٹ کے خطابی مقابلے میں پانچویں مرتبہ تاج اپنے نام کرنے کے ارادے سے اتری ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

پوچے فسٹروم: چار مرتبہ کی چیمپئن انڈیا پہلی بار خطابی مقابلے میں پہنچی بنگلہ دیش ٹیم کے خلاف انڈر -19 عالمی کپ ٹورنامنٹ کے خطابی مقابلے میں پانچویں مرتبہ تاج اپنے نام کرنے کے ارادے سے اتری ہے۔ اتوار کو کھیلے جا رہے مقابلہ میں بنگلہ دیش نے ٹاس جیت کر پہلے ہندوستان کو بلے بازی کے لئے مدعو کیا ہے۔

ہندوستانی ٹیم کپتان پريم گرگ کی قیادت میں دیرینہ حریف پاکستان کو 10 وکٹ سے شکست دے کر فائنل میں پہنچی ہے جبکہ بنگلہ دیش نے نیوزی لینڈ کو چھ وکٹ سے شکست دے کر فائنل میں جگہ بنائی ہے۔ ہندوستانی ٹیم جہاں پانچویں مرتبہ خطاب جیتنے کے ارادے سے اترے گی جبکہ پہلی بار فائنل میں پہنچی بنگلہ دیش کی ٹیم الٹ پھیر کرکے خطاب اپنے نام کرنے کی پوری کوشش کرے گی۔

ٹیم انڈیا مسلسل تیسری بار اور کل ساتویں بار فائنل میں پہنچی ہے۔ ہندوستان نے اس سے پہلے 2000، 2008، 2012 اور 2018 میں فائنل میں پہنچ کر خطاب جیتا تھا جبکہ وہ 2006 اور 2016 میں فائنل میں پہنچ کر رنر اپ رہی تھی۔ ہندوستان کو ایک بار پھر اپنے بلے بازوں اور گیند بازوں سے توقع رہے گی جنہوں نے ٹورنامنٹ میں مسلسل شاندار کارکردگی کی ہے۔18 سال کے بائیں ہاتھ کے بلے باز يشسوي جیسوال کی ٹورنامنٹ میں بہترین کارکردگی رہی ہے اور انہوں نے پاکستان کے خلاف سیمی فائنل میں ناٹ آؤٹ 105 رنز کی میچ فاتح اننگز کھیلی تھی۔

يشسوي نے اس سے پہلے آسٹریلیا کے خلاف کوارٹر فائنل میں 62 رن، نیوزی لینڈ کے خلاف ناٹ آوٹ 57، جاپان کے خلاف ناٹ آوٹ 29 اور سری لنکا کے خلاف 59 رنز بنائے تھے۔ وہ پانچ میچوں میں 312 رن کے ساتھ ٹورنامنٹ کے ٹاپ اسکورر ہیں۔
يشسوي کے جوڑی دار دويانش سکسینہ چار میچوں میں 148 رنز بنا چکے ہیں۔ انہوں نے پاکستان کے خلاف سیمی فائنل میں ناٹ آؤٹ نصف سنچری بنائی تھی۔ اگر ہندوستان کے دونوں سلامی بلے باز خطابی مقابلے میں اپنی فارم میں برقرار رہتے ہیں تو ہندوستان کو پانچویں مرتبہ چیمپئن بننے سے کوئی نہیں روک سکتا۔

دوسری طرف بنگلہ دیش کے محمود الحسن پانچ میچوں میں 176 رنز بنا چکے ہیں اور انہوں نے بھی سیمی فائنل میں نیوزی لینڈ کے خلاف 100 رنز کی میچ فاتح اننگز کھیلی تھی۔ بنگلہ دیش کے ٹی حسن نے پانچ میچوں میں 149 رنز بنائے ہیں۔ بنگلہ دیش کی جانب سے رقیب الحسن پانچ میچوں میں 11 وکٹ اور شريف الاسلام پانچ میچوں میں سات وکٹ لے چکے ہیں۔ ہندوستان کے لیگ اسپنر روی بشنوئی پانچ میچوں میں 13 وکٹ کے ساتھ کامیاب گیندبازوں کی فہرست میں چوتھے نمبر پر ہیں۔آکاش سنگھ نے پانچ میچوں میں صات اور سشانت مشرا نے چار میچوں میں پانچ وکٹ لئے ہیں۔