عامر کے ٹیسٹ سے ریٹائر ہونے پر سابق پاکستانی کھلاڑی مایوس

شعیب اختر، وسیم اکرم اور رمیز راجہ جیسے سابق کرکٹروں نے ملک کے 27 سالہ محمد عامر کے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائر ہونے پر سخت مایوسی کا اظہار کیا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

لاہور: پاکستان کےمتعدد کرکٹ کھلاڑیوں جیسے شعیب اختر ، وسیم اکرم اور رمیز راجہ نے ملک کے 27 سالہ محمد عامر کے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائر ہونے پر سخت مایوسی کا اظہار کیا ہے ۔ کہا جارہا ہے کہ عامر کے برطانوی شہری بننے کا امکان روشن ہیں ۔

سابق فاسٹ بالر شعیب اختر نے محمد عامر کے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائر ہونے پر سخت مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان نے ان پر بہت سرمایہ کاری کی لیکن جب ملک کی خدمت کرنے کا وقت آیا تو انہوں نے ریٹائرمنٹ لے لی۔یوٹیوب پر جاری اپنی ویڈیو میں شعیب اختر نے کہا کہ میں بہت مایوس ہوں کہ 27 سال کی عمر میں محمد عامر ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائر ہو گئے ہیں۔انہوں نے اپنی مثال دیتے ہوئے کہا کہ انگلینڈ اور نیوزی لینڈ کےخلاف سیریز میں وہ گھٹنے ٹوٹے ہونے کے باوجود بھاگے اور ٹیم کی جیت یقینی کی ،اب میں یہ سوچ رہا ہوں کہ 27 سال مجھے دیدیں میں پھر 50 ٹیسٹ میچ کھیل جاؤں گا۔

سابق کپتان اور آل راؤنڈر وسیم اکرم نے محمد عامر کے ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے فیصلے پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ پاکستان کو آسٹریلیا میں دو ٹیسٹ اورپھر انگلینڈ میں تین ٹیسٹ میچ میں ان کی ضرورت پڑے گی۔ٹوئٹر پر پیغام میں وسیم اکرم نے کہا کہ محمد عامر کی ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ میرے لئے حیران کن ہے۔

سابق ٹیسٹ کرکٹر رمیز راجہ نے کہا کہ محمد عامر کا 27 سال کی عمر میں ٹیسٹ کرکٹ کو خیرباد کہنا مایوس کن ہے، یہ ان کے لئے جانے کا نہیں تلافی کا وقت تھا۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک پیغام میں رمیز راجہ نے کہا کہ عامر کا فیصلہ پاکستان کرکٹ کی ضرورت کے مطابق نہیں ہے اور ایسا لگتا ہے کہ وہ دوبارہ ٹیسٹ کرکٹ شروع کریں گے۔

اس طرح کی خبریں بھی گردش میں ہیں کہ عامر کے برطانوی شہری بننے کا امکان روشن ہے، ان کی ستمبر 2016میں برطانوی شہری نرجس ملک سے شادی ہوئی تھی۔عامر مستقبل میں وہیں مستقل رہائش اختیار کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔اس ضمن میں پیسر نے اسپاؤس ویزا کے لیے درخواست دیدی تھی جس کے تحت وہ ڈھائی سال برطانیہ میں رہائش اختیار کر سکتے ہیں ، اسکے بعد مزید اتنے ہی عرصے کیلئے ویزے میں توسیع ممکن ہے۔