افغانستان کے لئے نئی مشکل، راشد خان نے کرکٹ کی کپتانی سے کیا انکار

اگر طالبان نے افغانستان کی خواتین کرکٹ ٹیم کو کھیلنے کی اجازت نہیں دی تو آسٹریلیا افغانستان کی مردوں کی کرکٹ ٹیم کو بھی عالمی مقابلوں میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دے گا۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

افغانستان پر طالبان کے قبضہ کے بعد وہاں روز نئے مسائل سامنے آ رہے ہیں ۔ اپنی شبیہ کی وجہ سے تو طالبان کو پریشانی ہے ہی ساتھ میں اب وہاں کرکٹ ٹیم کو لے کر غیر ضروری تنازعہ پیدا ہو گیا ہے۔ واضح رہے کل افغانستان کے کرکٹ بورڈ نے اگلے ماہ ہونے والے ٹی-20 عالمی کپ مقابلوں کے لئے اپنی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کے ناموں کا اعلان کیا تھا اور راشد خان کو ٹیم کا کپتان بنایا تھا ۔ اب راشد خان نے اس ٹیم کی کپتانی کرنے سے انکار کر دیا ہے ۔

راشد خان کےانکار اور استعفے کا تعلق افغانستان کی طالبان حکومت سے نہیں ہے بلکہ راشد خان کا کہنا ہے کہ جس ٹیم کا انہیں کپتان بنایا گیا ہے اس کے کھلاڑیوں کے انتخاب میں ان سے کوئی مشورہ نہیں کیا گیا ۔ راشد خان کا کہنا ہے کہ جس ٹیم کے کھلاڑیوں کے انتخاب میں ان کا کوئی مشورہ شامل نہیں ہے اس ٹیم کی کپتانی وہ کیسے کر سکتے ہیں۔ راشد خان نے کہا کہ افغانستان کے لئے کھیلنا ان کے لئے ہمیشہ فخر کی بات ہے۔


ایک جانب جہاں راشد خان نے افغانستان کی ٹیم کی کپتانی سے استعفی دے دیا ہے دوسری طرف آسٹریلائی کرکٹ بوڑد جہاں کرکٹ کے عالمی مقابلے ہونے ہیں ا س نے کہا ہے کہ اگر طالبان نے افغانستان کی خواتین کرکٹ ٹیم کو کھیلنے کی اجازت نہیں دی تو وہ افغانستان کی مردوں کی کرکٹ ٹیم کو بھی عالمی مقابلوں میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔