امریکی بینک ’فیڈرل ریزرو‘ کا شرح سود میں اضافہ کا اعلان، سونے-چاندی کی قیمتوں میں گراوٹ

فیڈرل ریزرو نے اپنے بیان میں سنہ 2023 تک شرح سود میں 0.6 فیصد اضافے کا امکان ظاہر کیا ہے، فیڈرل کے بیان کے بعد اسٹاک مارکیٹوں میں گراوٹ دیکھی گئی۔ سونے اور چاندی کی قیمتیں بھی لڑھک گئیں۔

تصویر بشکریہ ویکی پیڈیا
تصویر بشکریہ ویکی پیڈیا
user

یو این آئی

واشنگٹن: امریکہ کے سینٹرل بینک فیڈرل ریزرو نے کہا ہے کہ وہ اگلے دو برسوں میں افراط زر میں اضافے اور لیبر مارکیٹ کی مضبوطی کی امید ہے اور اس کے بعد پالیسی شرح سود میں اضافہ کیا جائے گا۔ فیڈرل ریزرو کے چیئرمین جیروم پاویل نے فیڈ کی فری مارکیٹ کمیٹی کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ’’ہم اس موسم گرما میں روزگار میں اچھا اضافہ نظر آسکتا ہے۔ یہ واضح ہے کہ ہم کافی مضبوط لیبر مارکیٹ کی طرف گامزن ہیں۔ ایک سال میں لیبر مارکیٹ بہت مضبوط ہوجائے گی‘‘۔

فیڈرل ریزرو نے اپنے بیان میں سنہ 2023 تک شرح سود میں 0.6 فیصد اضافے کا امکان ظاہر کیا ہے، لیکن ساتھ ہی یہ بھی کہا ہے کہ شرحوں میں تب ہی اضافہ کیا جائے گا جب بے روزگاری کم ہوگی اور افراط زر بڑھ کر دو فیصد سے زیادہ ہوجائے گا۔ فی الحال پالیسی سود کی شرحوں کو صفر 0.25 فیصد کے دائرے میں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ فیڈرل ریزرو کے بیان کے بعد اسٹاک مارکیٹوں میں گراوٹ دیکھی گئی۔ سونے اور چاندی کی قیمتیں بھی لڑھک گئیں۔


بیان میں کہا گیا ہے کہ ویکسینیشن کی وجہ سے کووڈ۔ 19 کے انفیکشن میں کمی آئی ہے۔ ان سب کے درمیان سینٹر بینک معیشت کی حمایت جاری رکھے گا۔ وہ سرکاری سیکورٹیز کے ذریعہ 80 ارب ڈالر اور رہن کے تعاون سے سیکورٹیز کے ذریعے 40 ارب ڈالر کی لیکویڈیٹی ہر ماہ بڑھتی رہے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔