اقتصادی بحران سے شیو سینا بھی پریشان، منموہن سنگھ کی تعریف، بی جے پی بھڑکی

شیو سینا نے اپنے اخبار ’سامنا‘ میں لکھا ہے کہ سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ نے بے وجہ منہ نہیں کھولا ہے، حکومت کو مندی کے تشویشناک حالات کیوں نظر نہیں آ رہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

شیو سینا نے ایک مرتبہ پھر مودی حکومت کو اپنی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ گرتی معیشت کو لے کر سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے جو بیان دیا ہے اس کی شیو سینا نے حمایت کی ہے۔ شیو سینا نے اپنے ترجمان اخبار ’سامنا‘ میں گرتی معیشت پر سوال اٹھائے ہیں۔ اخبار میں لکھا ہے کہ ڈاکٹر منموہن سنگھ معروف ماہر معیشت ہیں اور ان کو اقتصادیات کی اچھی سمجھ ہے۔

’سامنا‘ میں لکھا ہے کہ سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے بے وجہ منہ نہیں کھولا ہے۔ مندی کے خطرناک حالات حکومت کو کیوں نظر نہیں آ رہے ہیں اور یہ بات حیران کرنے والی ہے۔ وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن مندی کے حالات پر خاموشی اختیار کیے ہوئے ہیں۔ وزیر خزانہ پر تبصرہ کرتے ہوئے سامنا میں لکھا ہے کہ خاتون ہونا ایک الگ بات ہے، قومی معیشت کو پٹری پر لانا ایک الگ بات ہے اور دونوں میں بہت فرق ہے۔ ابھی تک نوٹ بندی اور جی ایس ٹی پر سوال اٹھانے والوں کو بے وقوف کہا گیا ہے۔

واضح رہے سابق وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ نے جی ڈی پی کی پانچ فیصد شرح کو لے کر مودی حکومت کو گھیرا تھا۔ انہوں نے معیشت کی سست رفتار پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ جون کی سہ ماہی میں جی ڈی پی کی پانچ فیصد شرح ہونا یہ بتاتا ہے کہ ہندوستان لمبی اقتصادی مندی کی گرفت میں ہے۔ سابق وزیر عظم نے کہا تھا کہ ہندوستان میں زیادہ تیزی سے ترقی کرنے کی اہلیت ہے لیکن مودی حکومت کی بد انتظامی کی وجہ سے اقتصادی سستی کا دور آ گیا ہے۔ انہوں نے کہا تھا کہ اقتصادی ترقی کو رفتار دینے کے لئے حکومت کو تمام فریق سے تبادلہ خیال کرنا چاہیے۔ بی جے پی کو شیو سینا کی یہ تنقید اچھی نہیں لگی ہے اور وہ اس پر بری طرح بھڑک گئی ہے۔