آر بی آئی نے عام آدمی کو دیا جھٹکا! ریپو ریٹ میں چوتھی مرتبہ اضافہ، بینکوں سے قرض لینا پڑے گا مہنگا

تہوار کے سیزن سے پہلے ہی عام لوگوں کو جھٹکا لگا ہے۔ آر بی آئی نے ریپو ریٹ میں 50 بیسس پوائنٹس کا اضافہ کیا ہے۔ اب قرض کی ای ایم آئی مزید مہنگائی ہو جائے گی

آر بی آئی، ریزرو بینک آف انڈیا / تصویر آئی اے این ایس
آر بی آئی، ریزرو بینک آف انڈیا / تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

ممبئی: عام لوگوں کو ایک بار پھر جھٹکا لگا ہے، کیونکہ آر بی آئی نے ریپو ریٹ میں 50 بیسس پوائنٹس (0.50 فیصد) اضافہ کیا ہے۔ اس کے بعد ریپو ریٹ 5.90 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق جمعہ کو ختم ہونے والی دو ماہانہ میٹنگ کے بعد ایک پریس کانفرنس کے دوران ریزرو بینک کے گورنر شکتی کانت داس نے ہندوستان کی موجودہ اقتصادی صورتحال پر ایک رپورٹ پیش کی۔

ہوم لون، گاڑیوں کے قرضے، ایجوکیشنل لون، پرسنل لون اور بزنس لون بھی مہنگے ہو جائیں گے۔ قرضوں کی لاگت میں اضافے کی وجہ سے عام لوگ غیر ضروری اخراجات سے گریز کرتے ہیں اور طلب کم ہوتی ہے۔ تاہم، ریپو ریٹ میں اضافے سے ان صارفین کو فائدہ پہنچے گا جنہوں نے ایف ڈی کرائی ہوئی ہے۔


آر بی آئی نے ملک میں مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کے تحت مئی سے اب تک ریپو ریٹ میں 1.40 فیصد کا اضافہ کیا تھا۔ کورونا کے دور میں ریپو ریٹ 4 فیصد پر تھا، جو اب بڑھ کر 5.40 فیصد ہو گیا تھا۔ آج اس میں پھر 0.50 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ اب یہ 5.90 فیصد تک پہنچ گیا ہے۔

ریپو ریٹ کا براہ راست تعلق بینک سے لیے گئے قرض اور ای ایم آئی سے ہے۔ دراصل، ریپو ریٹ وہ شرح ہے جس پر آر بی آئی بینکوں کو قرض دیتا ہے، جبکہ ریورس ریپو ریٹ وہ شرح ہے جس پر آر بی آئی بینکوں کو پیسے رکھنے پر سود ادا کرتا ہے۔


ریورس ریپو ریٹ کا استعمال بازاروں میں لیکویڈیٹی کی مقدار کو کنٹرول کرنے کے لیے کیا جاتا ہے۔ جب بھی مارکیٹ میں بہت زیادہ لیکویڈیٹی ہوتی ہے، آر بی آئی ریورس ریپو ریٹ بڑھاتا ہے، تاکہ بینک زیادہ سود حاصل کرنے کے لیے اپنا پیسہ اس کے پاس جمع کر سکے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔