نوٹوں سے کورونا وائرس پھیلنے کا خدشہ، آن لائن کریں لین دین: آر بی آئی کی صلاح

ریزرو بینک نے اپنی ویب سائٹ پر ایک نوٹیفکیشن جاری کر کے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے انفیکشن کے خدشے کے پیش نظر نقد لین دین کا کم از کم استعمال کریں

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

ملک میں کورونا وائرس کے شدید خطرے کے درمیان حکومت اور سرکاری اور عوامی شعبہ کے اداروں کی جانب سے عوام کو اس بیماری سے لڑنے کے طریقے بتائے جا رہے ہیں۔ اس ضمن میں ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) نے بھی لوگوں کو صلاح دی ہے کہ وہ نقد لین دین کا استعمال کم سے کم کر دیں، کیونکہ نوٹوں سے بھی کورونا وائرس پھیلنے کا خدشہ ہے۔

ریزرو بینک نے اپنی ویب سائٹ پر ایک نوٹیفکیشن جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے انفیکشن کے خدشے کے پیش نظر لازمی ہے کہ سماجی روابط کو کم کیا جائے۔ آر بی آئی نے کہا ہے کہ ایسے حالات میں نقد کی بجائے آن لائن طریقہ سے لین دین کیا جانا چاہیے۔

آر بی آئی نے اپنے نوٹیفکیشن میں مزید کہا، ’’آر بی آئی لوگوں کو یہ بتانا چاہتا ہے کہ این ای ایف ٹی، آئی ایم پی ایس، یو پی آئی اور بی بی پی ایس جیسی آن لائن پیمنٹ کی سہولیات دستیاب ہیں، جن کے ذریعہ آپ کسی بھی وقت فنڈ ٹرانسفر، سامان کی خریداری، خدمات کا استعمال اور بلوں کی ادائیگی آسانی سے کر سکتے ہیں۔‘‘

آر بی آئی نے کہا کہ آپ گھر پر رہ کر ہی موبائل بینکنگ، انٹرنیٹ بینکنگ اور کارڈ کے ذریعے بھی ادائیگی کر سکتے ہیں۔ آر بی آئی نے لوگوں کو بھیڑ بھاڑ والے مقامات پر جانے سے گریز کرنے کی بھی صلاح دی ہے۔

واضح ہو کہ ملک میں کورونا وائرس سے متاثرین کی تعداد 130 سے پار ہو گئی ہے اور ملک کی 15 ریاستوں میں کورونا وائرس پھیل گیا ہے۔ آندھرا پردیش میں ایک، دہلی میں 7، ہریانہ میں 14، کرناٹک میں 10، کیرالہ میں 25، مہاراشٹر میں 41، راجستھان میں 4، تمل ناڈو میں ایک، تلنگانہ میں 3، جموں و کشمیر میں 3، لداخ میں 3، اتر پردیش میں 17، اتراکھنڈ میں ایک اور اڈیشہ میں ایک معاملہ منظر عام پر آیا ہے۔ ملک بھر میں کورونا وائرس سے اب تک تین افراد کی موت ہو چکی ہے، جبکہ دنیا بھر میں 7000 سے زیادہ افراد اس انفیکشن سے ہلاک ہو چکے ہیں۔