معیشت کی ابتر صورتحال کے لیے نرملا سیتارمن ہی نہیں مودی خود بھی ذمہ دار: ممتا بنرجی

ضمنی انتخاب میں شاندار کامیابی ملنے کے بعدوزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے کہا ہے کہ بی جے پی کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ملک کی معاشی حالت بہتر نہیں ہے۔ مودی حکومت نے ملک کی معیشت کو اندھیرے میں پہنچادیا ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

کولکاتا: ضمنی انتخاب میں شاندار کامیابی ملنے کے بعد وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے جمعرات کو کہا ہے کہ بی جے پی کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ملک کی معاشی حالت بہتر نہیں ہے۔ مودی حکومت نے ملک کی معیشت کو اندھیرے میں پہنچادیا ہے۔

خیال رہے کہ رواں مالی سال کے دوسرے حصے میں ملک کی جی ڈی پی کی شرح اپنی سب سے نچلے سطح پر پہنچ گئی ہے۔پارلیمنٹ میں ترنمول کانگریس کے ذریعہ بھی اس کے خلاف آواز بلند کی جارہی ہے۔اب ممتا بنرجی نے مورچہ سنبھالتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کی خراب معیشت کیلئے صرف نرملا سیتارمن کو ذمہ دار ٹھہرانا بہتر نہیں ہے بلکہ اس کیلئے بذات خود مودی حکومت ذمہ دار ہے۔

وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ صرف وزیر خزانہ نرملا سیتارمن کو ملک کی خراب معیشت کیلئے ہدف ملامت بنانا صحیح نہیں ہے۔وزیرا علیٰ نے کہا کہ دراصل وزیرا عظم نریندر مودی پورے ملک کو اپنے کنٹرول میں کرلیا ہے۔وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ مودی نے بینک، کارپوریٹ پر قبضہ کرلیا ہے۔ممتا بنرجی نے کہا کہ میں بھی حکومت میں ہوں،میں ترقیاتی کام کرتی ہوں، میں ان لوگوں کیلئے کام کرتی ہوں جن تک ملک کا فیضیاب پہنچ نہیں سکا ہے۔میں کسانوں کیلئے کام کرتی ہوں،ممتا بنرجی نے کہا کہ مگر ملک کی ترقی کی راہ میں سیل ٹیکس، سی بی آئی،ای ڈی اور دیگر ایجنسیوں کے ذریعہ لوگوں کو خوف زدہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔مرکزی جانچ ایجنسی کے ذریعہ ہر ایک چیز کو خوف زدہ کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ ملک کی معیشت کو جس انداز سے چلایا جارہا ہے اور جو رویہ اختیار کیا جارہا ہے اس سے خوف کا ماحول پیدا ہوا ہے۔وزیرا علیٰ نے کہا کہ لوگ بینک میں پیسے رکھنے سے خوف زدہ ہیں۔بینک سے روپے نکالے جارہے ہیں۔گھر میں روپے رکھنا لوگ پسند کررہے ہیں۔ وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ این آر سی اور شہری ترمیمی بل کے ذریعہ ملک کو سیاسی طور پر تقسیم کیا جارہا ہے۔
اس موقع پر وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال میں سرمایہ کاری کا ماحول بہتر ہوا ہے۔بڑے پیمانے پر سرمایہ کار یہاں سرمایہ کاری کے خواہش مند ہیں۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ بنگال میں ورک کلچر بحال ہوگیا ہے۔صنعت کاری کیلئے آسان قوانین بنائے گئے ہیں۔نہ ورکروں کی کمی ہے اور نہ ہی زمین کی ہے۔