پالیسی کی شرح میں کوئی تبدیلی نہیں، این ایچ بی اور نابارڈ کو 10 ہزار کروڑ روپے

آر بی آئی گورنر شکتی کانت داس نے کہا کہ ریپو ریٹ کو چار فیصد، ریورس ریپو ریٹ کو 4.25 فیصد اور مارجینل اسٹینڈنگ فیسلیٹی (ایم ایس ایف) کو 4.25 فیصد پر جوں کا توں رکھا گیا ہے۔

ریزرو بینک آف انڈیا کی فائل تصویر
ریزرو بینک آف انڈیا کی فائل تصویر
user

یو این آئی

نئی دہلی: کورونا وائرس ’کووڈ -19‘ کی وبا کے درمیان ریزرو بینک کی مالیاتی پالیسی کمیٹی نے پالیسی کی شرحوں میں کوئی تبدیلی نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور جمعرات کو کہا کہ مہنگائی کو ہدف کے مطابق دائرے میں رکھنے اور اس وبا کے اثر سے معیشت کو نکالنے تک اس کا رخ ایکوموڈیٹو بنا رہے گا۔

رواں مالی سال میں کمیٹی کی سہ روزہ دوسری میٹنگ کے آج ختم ہونے کے بعد گورنر شکتی کانت داس نے کہا کہ کمیٹی نے اتفاق رائے سے یہ فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریپو ریٹ کو چار فیصد، ریورس ریپو ریٹ کو 4.25 فیصد اور مارجینل اسٹینڈنگ فیسلیٹی (ایم ایس ایف) کو 4.25 فیصد پر جوں کا توں رکھا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے متاثرہ معیشت میں کچھ بہتری کی علامات مل رہی تھیں، لیکن اس وبائی مرض سے متاثرہ افراد کی تعداد میں تیزی سے اضافے کی وجہ سے کچھ ریاستوں اور بڑے شہروں میں لاک ڈاؤن دوبارہ لگائے جانے کی وجہ سے علامات درہم برہم ہوگئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ توقع ہے کہ رواں مالی سال کی پہلی ششماہی میں افراط زر میں اضافہ ہوگا لیکن دوسرے ششماہی میں یہ اعتدال پسند ہوسکتا ہے۔

next