ورلڈ بینک نے ایک بار پھر دیا مودی حکومت کو جھٹکا، جی ڈی پی شرح ترقی کا اندازہ گھٹایا

عالمی بینک نے کہا ہے کہ بنگلہ دیش کی معاشی شرح ترقی ہندوستان سے زیادہ تیز ہوگی۔ رپورٹ کے مطابق بنگلہ دیش میں اس مالی سال میں جی ڈی پی میں 7 فیصد سے زیادہ اضافہ ہو سکتا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مرکز کی مودی حکومت کو معاشی محاذ پر ایک اور جھٹکا لگا ہے۔ اب عالمی بینک نے ہندوستان کی جی ڈی پی شرح کے اندازے کو گھٹا دیا ہے۔ عالمی بینک کے مطابق مالی سال 20-2019 میں ہندوستانی جی ڈی پی میں شرح ترقی صرف 5 فیصد تک رہ سکتی ہے۔ اس کے بعد اگلے مالی سال میں بھی ہندوستان کی جی ڈی پی میں صرف 5.8 فیصد اضافے کا امکان ہے۔ عالمی بینک کے گلوبل اکونومک پروسپیکٹس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان میں غیر بینکنگ مالی کمپنیوں کی قرض تقسیم کمزور بنی ہوئی ہے۔

عالمی بینک کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان سے تیز معاشی شرح ترقی بنگلہ دیش کی ہوگی۔ رپورٹ کے مطابق بنگلہ دیش میں اس مالی سال میں جی ڈی پی میں 7 فیصد سے زیادہ کا اضافہ ہو سکتا ہے۔ دوسری طرف پاکستان کی جی ڈی پی میں اس مالی سال میں صرف 3 فیصد کا اضافہ ہو سکتا ہے۔

واضح رہے کہ عالمی بینک سے قبل مرکز کی مودی حکومت نے بھی کچھ اسی طرح کا اندازہ ظاہر کیا تھا۔ منگل کو مرکز کی مودی حکومت کی جانب سے جی ڈی پی سے متعلق قیاس آرائیوں پر مبنی اعداد و شمار پیش کیے گئے تھے۔ اس کے مطابق مالی سال 20-2019 میں جی ڈی پی شرح ترقی صرف 5 فیصد رہ سکتی ہے۔ اس سے پہلے 19-2018 میں حقیقی شرح 6.8 فیصد رہی تھی۔ مالی سال 18-2017 میں جی ڈی پی شرح ترقی 7.2 فیصد تھی۔