معیشت میں بہتری کا مودی حکومت کے پاس کوئی منصوبہ نہیں: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے کہا کہ معاشی بدحالی کی وجہ سے ملک کی اور خاص طور سے دیہی ہندستان کی حالت انتہائی خراب ہوگئی ہے لیکن حکومت کے پاس اس بحران سے نکلنے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے

راہل گاندھی
راہل گاندھی

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس رہنما راہل گاندھی کا کہنا ہے کہ معاشی بدحالی کی وجہ سے ملک کی اور خاص طورسے دیہی ہندستان کی حالت انتہائی خراب ہو گئی ہے لیکن حکومت کے پاس اس بحران سے نکلنے کا کوئی منصوبہ نہیں ہے ۔

واضح رہے کہ ملک میں معاشی مندی کے تعلق سے راہل گاندھی حکومت پر مسلسل حملہ آور ہو رہے ہیں۔ انھوں نے جمعہ کو بھی حکومت کو نشانہ بنایا اور ٹویٹ کیا، ’’دیہی ہندستان کی حالت انتہائی خراب ہے ۔معیشت تباہ ہوگئی ہے اور حکومت کے پاس اس سے نمٹنے کی کوئی تدبیر نہیں ہے ۔‘‘

مودی حکومت کی پالیسیوں کی وجہ سے اقتصادی مندی کے حوالہ سے راہل گاندھی نے کہا کہ مندی سے باہر آنے کا اس حکومت کے پاس کوئی منصوبہ نہیں ہے اس لیے اسے کانگریس کا سہارالینا چاہئے ۔ انھوں نے کہا، ’’ وزیراعظم اور وزیرخزانہ کو کساد بازاری سے نمٹنے کے لیے کانگریس کے منشور کی مددلینی چاہئے جس میں صورتحال کا پیشگی اندازہ لگاکر اس سے نمٹنے کی تدابیر بتائی گئی ہیں ۔‘‘

اس کے ساتھ ہی انھوں نے ایک خبر بھی پوسٹ کی ہے جس میں کہا گیا ہے ، دیہی کھپت عام طور پر شہری کھپت کے مقابلہ تیزی سے بڑھتی ہے لیکن اس سہ ماہی کا رخ اس کے عین برعکس ہے ۔ستمبر سہ ماہی میں دیہی کھپت سات سال میں سب سے نچلی سطح پر ہے ۔

Published: 18 Oct 2019, 7:00 PM