سوشانت سنگھ کی ’پرسنل ڈائری‘ سے کچھ صفحات کس نے پھاڑے؟

ڈائری سامنے آنے کے بعد ممبئی پولس پر انگلیاں اٹھ رہی ہیں۔ سوال کیا جا رہا ہے کہ سوشانت کی فیملی اور دوستوں کے ذریعہ بار بار پرسنل ڈائری کا تذکرہ کیے جانے کے بعد بھی پولس نے اس طرف دھیان کیوں نہیں دیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

تنویر

بالی ووڈ اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کی موت کا معاملہ لگاتار سرخیوں میں ہے۔ روزانہ کوئی نہ کوئی نئی بات سامنے آتی ہے اور شک و شبہات کے دائرے بڑھتے چلے جاتے ہیں۔ تازہ ترین اطلاعات کے مطابق پولس کو سوشانت سنگھ کی ایک ’پرسنل ڈائری‘ ہاتھ لگی ہے، لیکن حیران کرنے والی بات یہ ہے کہ اس کے کچھ صفحات پھٹے ہوئے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ سوشانت اپنی اس ڈائری میں نجی تجربات کے ساتھ ساتھ آئندہ کی پلاننگ کے بارے میں بھی لکھا کرتے تھے۔ اب سوال یہ اٹھ رہا ہے کہ آخر اس ڈائری سے صفحات کس نے پھاڑ ڈالے۔

قابل ذکر ہے کہ سوشانت سنگھ راجپوت کے والد کے. کے. سنگھ کے وکیل وکاس سنگھ اس ڈائری کا تذکرہ پہلے ہی کر چکے ہیں۔ انھوں نے ایک موقع پر کہا تھا کہ ڈائری کے ملنے کے بعد کئی راز کھل سکتے ہیں۔ اب سب کی نظریں ڈائری پر ہیں کہ آخر اس میں کیا کچھ لکھا ہوا ہے۔ ڈائری ملنے کا دعویٰ 'ٹائمز ناؤ' نے کیا ہے اور بتایا ہے کہ اس کے کچھ صفحات پھٹے ہوئے ہیں۔ چینل کا دعویٰ ہے کہ ڈائری میں ایک نام کا ذکر ہے جس کے بعد کے صفحات غائب کر دیے گئے ہیں۔

اس ڈائری کے سامنے آنے کے بعد ممبئی پولس پر بھی کئی لوگ انگلیاں اٹھا رہے ہیں۔ ان سے سوال یہ کیا جا رہا ہے کہ آخر سوشانت سنگھ کی فیملی اور دوستوں کے ذریعہ بار بار پرسنل ڈائری کا تذکرہ کیے جانے کے بعد بھی پولس نے اس طرف دھیان کیوں نہیں دیا۔ دراصل سوشانت سنگھ کی سابقہ گرل فرینڈ انکتا لوکھنڈے نے بھی اپنے ایک انٹرویو میں کہا تھا کہ سوشانت پرسنل ڈائری لکھتا تھا۔ انکتا نے اس وقت بتایا تھا کہ جب سوشانت ان کے ساتھ تھے تب بھی انھوں نے آئندہ پانچ سالوں کی پلاننگ ڈائری میں کی تھی اور وہ کام کیے بھی۔

Published: 7 Aug 2020, 11:34 AM
next