فرقہ وارانہ ٹوئٹ کرنے پر اداکارہ پائل روہتگی کے خلاف تحقیقات کا حکم

ایڈوکیٹ دیشمکھ نے عدالت کو بتایا کہ اس سلسلے میں جب انہوں نے مقامی پولیس میں شکایت درج کروائی تو پولیس نے اطمینان بخش کارروائی نہیں کی اور نہ ہی ایف آئی آر درج کی۔

پائل روہتگی، تصویر آئی اے این ایس
پائل روہتگی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ممبئی: ممبئی کی مقامی عدالت نے آج یہاں فرقہ وارانہ ٹوئٹس کرنے کے معاملے میں اداکارہ پائل روہتگی کے خلاف تحقیقات کیے جانے کا حکم جاری کیا ہے۔ اندھیری کی مجسٹریٹ عدالت نے پولیس کو ہدایت دی ہے کہ وہ اداکارہ کی جانب سے کیے گئے متعدد ٹوئٹ کا مطالعہ کریں اور عدالت میں ایک رپورٹ پیش کریں کہ آیا جن پیغامات کے تعلق سے شکایت کی گئی ہے اس سے کسی کے مذہبی جذبات مجروح ہوتے ہیں۔

اداکارہ کے خلاف شہر کے ایک وکیل علی کاشف خان دیشمکھ نے مقامی عدالت میں ایک شکایت درج کروائی تھی اور عدالت کو بتایا کہ پائل نے اپنے ٹوئٹر اکاونٹ پر متعدد مرتبہ ایک مخصوص فرقے کو نشانہ بناتے ہوئے تضحیک آمیز پیغامات روانہ کیے ہیں۔ ایڈوکیٹ دیشمکھ نے عدالت کو بتایا کہ اس سلسلے میں جب انہوں نے مقامی پولیس میں شکایت درج کروائی تو پولیس نے اطمینان بخش کارروائی نہیں کی اور نہ ہی ایف آئی آر درج کی۔ عدالت نے آج سماعت کے دوران سی آر پی سی کے دفعہ 202 کے تحت رپورٹ طلب کرلی اور معاملے کی سماعت 30 اپریل تک ملتوی کر دی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔