کپور خاندان تاریخی ’آر کے اسٹوڈیو‘ کو بیچنے پر مجبور

راج کپور نے اپنی زیادہ تر فلموں کی شوٹنگ آر کے اسٹوڈیو میں ہی کی تھی۔ اسٹوڈیو سے زیادہ آمدنی نہ ہونے کے سبب کپور خاندان نے اسے بیچنے کا فیصلہ لیا۔

تصویر سوشل میدیا
تصویر سوشل میدیا
user

قومی آوازبیورو

بالیوڈ کے ’گریٹ شو مین‘ راج کپور کے 70 سال پرانے آر کے اسٹوڈیو کو بیچنے کا عمل شروع ہو گیا ہے۔ ممبئی کے چمبور علاقہ میں واقعہ اس اسٹوڈیو کو بیچنے کی فیصلہ خود کپور خاندان نے لیا ہے۔ دراصل عرصہ دراز سے اس اسٹوڈیو میں زیادہ کام نہیں ہو رہا، آر کے فلمز کے بینر تلے فلمیں بھی نہیں بن رہی اور دوسرے لوگ بھی اسے کرایہ پر نہیں لے رہے تھے۔

اسٹوڈیو کے خسرے میں چلنے کے سبب کپور خاندان نے اجتماعی طور پر اسے فروخت کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔ یہ اسٹوڈیو تقریباً 2 ایکڑ زمین پر پھیلا ہوا ہے اور راج کپور کی زیادہ تر فلموں کی شوٹنگ یہیں ہوئی تھی۔ آر کے اسٹوڈیو کے خسارے میں جانے کی ایک وجہ اس کی لوکیشن بھی ہے۔ دراصل جس علاقہ میں یہ واقع ہے وہاں شوٹنگ بہت کم ہوتی ہے۔

زیادہ تر تخلیق کار اپنی فلموں کی شوٹنگ وسٹرن لائنز میں فلم سٹی اور دیگر مقامات پر کرتے ہیں جبکہ آر کے اسٹوڈیو ہاربر لائن پر موجود ہے۔ شوٹنگ کے لئے لوگ اتنی دور کا سفر نہیں کرنا چاہتے۔

کپور خاندان اس پراپرٹی کو فروخت کرنے کے لئے بلڈرس، کارپوریٹرس اور ڈیولپرس کے ابطہ میں ہے اور جلد از جلد اس کو بیچنے کی تیاری چل رہی ہے۔ گزشتہ سال اسٹوڈیو میں آگ لگ گئی تھی جس سے اسے کافی نقصان پہنچا تھا۔

آر کے اسٹوڈیو کو بیچنے کے فیصلے پر کپور خاندان کے رکن اور معروف اداکار رشی کپور نے میڈیا سے اپنا درد بیان کیا ہے۔ ممبئی مرر کی ایک رپورٹ کے مطابق رشی کپور نے کہا، ’’ہم نے اپنے دلوں پر پتھر رکھے، چھاتی پر پتھر رکھ کر اور سوچ سمجھ کر یہ فیصلہ لیا ہے۔‘‘

اب دیکھنا یہ ہے کہ راج کپور کے خوابوں کا مقام آر کے اسٹوڈیو فروخت ہونے کے بعد تاریخ بن کر رہ جائے گا یا پھر کوئی قدر دان اس کو نئی زندگی دے کر پھر سے آباد کرے گا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 26 Aug 2018, 6:36 PM