عامر خان نے ہر کردار کو کمال تک پہنچایا ہے

دیہی پس منظر پر بنی فلم ’لگان‘ نہ صرف باکس آفس پر سپر ہٹ ثابت ہوئی بلکہ اسے باوقار اعزاز آسکر میں غیر ملکی فلموں کے زمرے میں بھی نامزد کیا گیا۔ لیکن بدقسمتی سے اس فلم کو ایوارڈ نہیں مل سکا۔

By یو این آئی

ممبئی : بالی ووڈ میں مسٹر پرفیكشنسٹ کے نام سے مشہور عامر خان ان گنے چنے اداکاروں میں سے ایک ہیں جو فلموں کی تعداد کے بجائے فلم کے معیار کو زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔ اپنی خوبیوں اورخصوصیات کی وجہ سے عامر خان اپنے معاصر اداکاروں سے کافی آگے نکل چکے ہیں اور آج کسی فلم میں ان کا ہونا ہی کامیابی کی ضمانت سمجھا جاتا ہے۔عامر خان کی پیدائش 14 مارچ 1965 کو ممبئی میں ہوئی۔ ان کے والد طاہر حسین اور چچا ناصر حسین جانے مانے فلم ساز تھے ۔گھر میں فلمی ماحول کی وجہ سے عامر خان کی دلچسپی بھی فلموں میں ہو گئی اور وہ اداکار بننے کا خواب دیکھنے لگے۔

عامر خان نے اپنے فلمی کیریئر کا آغاز سال 1973 میں بطور چائلڈ آرٹسٹ اپنے چچا ناصر حسین کے بینر تلے بنی فلم ’یادو کی بارات‘سے کیا۔ بعد میں انہوں نے سال 1974 میں ریلیز فلم ’مدهوش ‘میں بھی بطور چائلڈ اسٹار کام کیا۔ اس کے بعد انہوں نے تقریبا 11 برسوں تک فلم انڈسٹری سے کنارہ کر لیا۔

سال 1984 میں آئی فلم ’ہولی‘سے عامر خان نے بطور اداکار فلمی کیریئر کا آغاز کیا۔ لیکن وہ ناظرین کے درمیان اپنی شناخت کرنے میں ناکام رہے۔تقریبا ًچار سال تک نگری ممبئی میں جدوجہد کرنے کے بعد 1988 میں اپنے چچا ناصر حسین کے بینر تلے بنی فلم ’قیامت سے قیامت تك‘كی کامیابی کے بعد عامر خان بطور اداکار فلم انڈسٹری میں اپنی شناخت بنانے میں کامیاب ہو گئے۔فلم میں اپنی بااثر اداکاری کے لیے انہیں اس سال فلم فیئر ایوارڈ دیا گیا۔

عامر خان نے  ہر کردار کو کمال تک پہنچایا ہے
فلم ’ایڈیٹ‘ کا پوسٹر

سال 1994 میں راجکمار سنتوشی کی ہدایت میں بنی فلم’انداز اپنا اپنا‘میں عامر خان کی اداکاری کا نیا رنگ دیکھنے کو ملا۔ اس فلم کے پہلے ان کے بارے میں یہ بات کہی جاتی تھی کہ وہ صرف رومانی کردار ہی ادا کر سکتے ہیں لیکن عامر خان نے اداکار سلمان خان کے ساتھ اپنے مزاحیہ اداکاری سے ناظرین کو بھر پور محظوظ کیا۔ فلم میں اپنے بہترین اداکاری کے لیے وہ بہترین اداکار کے لئے فلم فیئر ایوارڈ کے لئے نامزد کیا گیا۔

سال 1994 کی فلم’بازی‘ میں، ان کی اداکارہ کی نئی شکل د یکھنے کو ملی۔ دلچسپ بات ہے کہ اس فلم کے ایک گانے میں عامر خان نے ایک لڑکی کا کردار ادا کیا اور اس کے لیے انہوں نے اپنے پورے جسم پر ویكسن کا استعمال کیا تھا۔

عامر خان نے  ہر کردار کو کمال تک پہنچایا ہے
فلم ’لگان‘ کا پوسٹر

سال 1996 میں عامر خان کے فلمی کیریئر کی ایک اور اہم فلم’راجہ ہندوستانی‘ریلیز ہوئی ۔اس فلم میں انہوں نے اپنی بااثر اداکاری سے ایک بار پھر ناظرین کا دل جیت لیا۔ اس فلم سے متعلق ایک دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ فلم میں ایک گانے کے دوران عامر خان کو نشے میں اداکاری کرنی تھی اور عامر خان نے ذاتی زندگی میں کبھی شراب نہیں پی تھی۔ لیکن اس فلم کو سلور ا سکرین پر اصل طور پر پیش کرنے کیلئے عامر خان نے اپنی زندگی میں پہلی بار شراب پی کر اداکاری کی ۔

1998 میں عامر خان کی ایک اور سپر ہٹ فلم ’غلام‘ ریلیز ہوئی۔ اس فلم سے متعلق بھی ایک دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ فلم کے ایک منظر کے دوران عامر خان کو ٹرین کی مخالف سمت میں دوڑ لگانی ہوتی ہے اور فلم کے سین کو چیلنج کے طور پر لیتے ہوئے موت کی پرواہ کئے بغیر وہ ٹرین کے سامنے آنے سے نہیں ہچکچائے۔

عامر خان نے  ہر کردار کو کمال تک پہنچایا ہے
فلم ’غجنی ‘کا پوسٹر

سال 2001 میں عامر خان نے فلم بنانے کے شعبہ میں بھی قدم رکھا۔ عامر خان پروڈکشن کے بینر تلے انہوں نے فلم’لگان‘ بنائی۔ اس فلم میں عامر خان نے ایک ایسے دیہاتی نوجوان بھون کاکردار میں تھے جو انگریزوں کو ٹیکس دینے سے انکار کرتا ہے اور انہیں ان کے پسندیدہ کھیل کرکٹ میں شکست دینے کا چیلنج دے دیتا ہے۔

دیہی پس منظر پر بنی یہ فلم نہ صرف باکس آفس پر سپر ہٹ ثابت ہوئی بلکہ اسے باوقار اعزاز آسکر میں غیر ملکی فلموں کے زمرے میں بھی نامزد کیا گیا لیکن بدقسمتی سے اس فلم کو ایوارڈ نہیں مل سکا۔

سال 2001 کے بعد عامر خان نے تقریبا ًچار سال تک فلم انڈسٹری سے دوری بنائی رکھی ۔سال 2005 میں عامر خان نے منگل پانڈے سے ایک بار پھر فلم انڈسٹری میں قدم رکھا۔اس فلم سے منسلک دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ فلم کے کردار منگل پانڈے کو زیادہ حقیقی دکھانے کے لیے عامر خان نے اپنی موچھوں میں اضافہ کیا۔

عامر خان نے  ہر کردار کو کمال تک پہنچایا ہے

سال 2007 میں عامر خان نے فلم’تارے زمین پر‘ پروڈیوز اور ڈائریکٹ کی۔ اس فلم کوعامر خان نے اپنی ہدایت سے اس فلم کو سپر ہٹ بنادیا۔

2008 میں عامر خان کی ایک اور سپر ہٹ فلم ’گجنی‘ ریلیز ہوئی ۔ اس فلم میں عامر خان کی اداکاری کے نئے ایام دیکھنے کو ملے۔ اس فلم کے کردار کو ادا کرنے کے لیے عامر نے اپنے جسم کو خاص بنانے کے لئے سکس پیک بنایا۔ جس کو ناظرین نے بے انتہا پسند کیا۔

سال 2009 میں عامر خان کے فلمی کیریئر کی ایک اور سپر ہٹ فلم ’تھری اڈيٹس‘ ریلیز ہوئی۔ فلم نے باکس آفس پر 202 کروڑ روپے کی شاندار کمائی كی ۔تھريی اڈيٹ 200 کروڑ کمانے والی پہلی فلم تھی۔

عامر خان نے  ہر کردار کو کمال تک پہنچایا ہے
فلم ’لگان‘ کا پوسٹر

عامر خان اپنے فلمی کیریئر میں سات مرتبہ فلم فیئر ایوارڈ سے نوازے جا چکے ہیں۔ عامر خان کو پدم شری اور پدم بھوشن سے بھی نوازا جا چکا ہے۔ عامر خان نے کئی فلموں میں اپنی آواز سے سامعین کو اپنا دیوانہ بنایا ہے۔ انہوں نے سب سے پہلے سال 1998 میں آئی فلم غلام میں’آتی کیا كھنڈالا‘ گيت گایا ۔اس کے بعد اس گیت کے کامیاب ہونے کے بعد عامر خان نے’دیکھو 2000 زمانہ آ گیا‘،’ہولی رے‘،’چندہ چمکے چمچم‘،’رنگ دے بم بولے‘ جیسے سپرہٹ گانے گائے ہیں۔

2013 میں عامر خان کی کیریئر کی سپر ہٹ فلم’دھوم 3‘ ریلیز ہوئی۔ اس فلم نے باکس آفس پر 280 کروڑ روپے کا بزنس کیا۔ سال 2014 میں عامر خان کی فلم ’پی کے‘ ریلیز ہوئی۔ اس فلم نے باکس آفس پر 340 کروڑ روپے سے زیادہ کی کمائی کر کے نئی تاریخ رقم کی ہے۔

سال 2016 میں عامر خان کے کیریئر کی سب سے زیادہ سپر ہٹ فلم’دنگل‘آئی۔ اس فلم میں عامر خان نے ایک پہلوان کا کردار ادا کیا تھا۔ یہ فلم ہریانہ کے پہلوان مہاویر سنگھ پھوگٹ کی زندگی پر مبنی ہے، جنہوں نے کافی مخالفت کے باوجود اپنی دونوں بیٹیوں کو کشتی کے میدان میں اتارا۔ فلم نے باکس آفس پرتقریباً 390 کروڑ روپے کی شاندار کمائی ہے۔

سال 2017 میں عامر خان کی ’سیکریٹ سپر اسٹار‘ ہٹ ثابت ہوئی۔