صحن مطاف میں طواف کے لیے مختص راستے کیوں تبدیل کیے گئے؟

عمرہ مناسک کی بحالی کے پہلے اور دوسرے مراحل میں طواف کے لیے جو ٹریک وضع کئے گئے تھے تیسرے مرحلے کے بعد ان میں تبدیلی کی گئی ہے

صحن مطاف میں طواف کے لیے مختص راستے کیوں تبدیل کیے گئے؟
صحن مطاف میں طواف کے لیے مختص راستے کیوں تبدیل کیے گئے؟
user

قومی آوازبیورو

حرمین شریفین کی جنرل پریزیڈینسی کے زیر انتظام عمرہ کے مناسک کی ادائی اور مسجد حرام میں نمازیوں‌ کی تعداد کو کنٹرول کرنے کی ذمہ دار انتظامیہ نے مطاف کے صحن میں طواف کے لیے مختص کردہ راستے تبدیل کر دیے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق عمرہ مناسک کی بحالی کے پہلے اور دوسرے مراحل میں طواف کے لیے جو ٹریک وضع کئے گئے تھے تیسرے مرحلے کے بعد ان میں تبدیلی کی گئی ہے۔ پہلے دو ٹریک عمر رسیدہ اور معذور سے دوچار عمرہ زائرین کے لیے مختص ہیں۔ ایک ٹریک سے دوسرے ٹریک کے درمیان 360 سینٹی میٹر کا فاصل ہے۔

صحن مطاف میں طواف کے لیے مختص راستے کیوں تبدیل کیے گئے؟

ھجوم کو کنٹرول کرنے کی ذمہ دار کمیٹی کے ڈائریکٹر انجینیر اسامہ الحجیلی نے بتایا کہ جنرل پریزیڈینسی نے مطاف میں عمرہ زائرین کے طواف میں مدد کے لیے تین الگ الگ رنگوں کی وردیوں والے 531 افراد تعینات کیے ہیں انہیں 159 کے گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے اور ہر 18 رضاکاروں کے لیے ایک سپر وائزر مقر ہے۔ خواتین کو کنٹرول کرنے کے لیے 250 خواتین پر مشتمل عملہ تعینات ہے۔

حرمین شریفین کی جنرل پریذیڈینسی کے چیئرمین ڈاکٹر عبدالرحمان السدیس نے عمرہ مناسک کے تیسرے مرحلے کے آغاز کے بعد صحن مطاف میں عمرہ زائرین کے لیے مختص کردہ ٹریک تبدیل کرنے اور پہلے دو ٹریک صرف معذور اور عمرہ رسیدہ معتمرین کے لیے مختص کرنے کو کہا گیا تھا۔

صحن مطاف میں طواف کے لیے مختص راستے کیوں تبدیل کیے گئے؟

انتظامیہ کا کہنا ہے کہ صحن مطاف میں ہونے والی تبدیلیوں کا پس منظر کرونا کی وبا کی روک تھام کے لیے اقدامات ہیں اور حکومت بیت اللہ میں آنے والے اللہ کے مہمانوں کی صحت کو یقینی بنانے کے لیے بھرپور اقدمات کررہی ہے۔

(بشکریہ العربیہ ڈاٹ نیٹ)

    next