سعودی عرب نے لبنان کا سفر کرنے والے شہریوں کو جاری کی وارننگ

لبنان میں موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے وزارت نے تمام شہریوں کی حفاظت کے پیش نظر لبنان نہ جانے کی ہدایت دی ہے اور وہاں سعودی لوگوں کو محتاط رہنے کے لئے بھی کہا ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

ریاض: سعودی عرب نے ملک کے شہریوں کو لبنان نہیں جانے کے لئے وارننگ جاری کی ہے۔ وزارت خارجہ نے ایک بیان جاری کر کے کہا ہے کہ سعودی کے جو بھی شہری لبنان میں ہیں وہ محتاط رہیں۔ لبنان میں موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے وزارت نے تمام شہریوں کی حفاظت کے پیش نظر لبنان نہ جانے کی ہدایت دی ہے اور وہاں سعودی لوگوں کو محتاط رہنے کے لئے بھی کہا ہے۔

واضح رہے کہ بیروت میں ٹیکسوں کے نئے نفاذ کے اعلان کے باعث ہنگامہ پھوٹ پڑا ہے اور ہزاروں لوگ حکومت کے خلاف مظاہرہ کر رہے ہیں۔ سعودی شہریوں کو سفارت خانے سے رابطے کے لیے ہنگامی رابطہ نمبر فراہم کیے گئے ہیں۔

بیان میں کسی بھی ہنگامی یا سیکورٹی کی صورتحال ہونے پر لبنان میں موجود شہریوں سے سعودی سفارت خانے سے رابطہ کرنے کے لئے بھی کہا گیا ہے۔ واضح ر ہے کہ لبنان نے قرض سے دوچار بجٹ کو باہر نکالنے کے لئے اضافی فنڈز اکٹھے کرنے کے مقصد سے وهاٹس ایپ کے آن لائن کال پر فی مہینہ چھ ڈالر ٹیکس لگانے کا فیصلہ کیا تھا، جس کی وجہ سے ملک میں بڑے پیمانے لوگ احتجاجی مظاہرے کر رہے ہیں۔ سعودی نے لبنان میں جلد امن اور استحکام کی توقع ظاہر کی ہے۔

دوسری جانب مصر کے سفارت خانے کی جانب سے بھی لبنان میں موجود اپنے شہریوں کو مظاہروں والے علاقوں میں جانے سے گریز کرنے کوکہا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ نقل و حرکت محدود کرنے اور لبنان کی حکومت سے جاری کردہ ہدایات پر عمل کرنے پر زور دیا گیا ہے۔

دریں اثناء لبنان میں موجود کویتی سفارت خانے کی جانب سے اپنے شہریوں کو کہا گیا ہے کہ لبنان کا سفر کرنے کے خواہش مند کویتی شہری لبنان میں جاری احتجاج اور بدامنی کے خاتمے تک سفر کے لیے انتظار کریں۔ لبنان میں موجود کویتی شہریوں سے بھی کہا گیا ہے کہ پوری طرح سے احتیاط برتیں اور ہجوم سے دور رہیں۔

واضح رہے کہ جمعرات کو لبنان حکومت کی جانب سے ٹیکسوں کے نفاذ کا اعلان کیا گیا تھا جس کے خلاف عوام کی بڑی تعداد سڑکوں پرنکل آئی ہے اور پرتشدد مظاہروں کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔ جمعہ کے روز بھی بیروت کی سڑکوں پر مظاہرین نے مختلف جگہوں پر ٹائر جلا کر مظاہرے کیے اور معاشی بحران پر حکومت سے استعفے کا مطالبہ کیا ہے۔