اسرائیل کی سلامتی کے تئيں امریکہ کاعزم پختہ ، امریکی وزیر خارجہ کا بیان

امریکی اور اسرائیلی وزیر خارجہ نے علاقائی سلامتی کے چیلنجوں، فلسطینی عوام کو انسانی امداد بہم پہنچانے، اور عرب ممالک کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے پر تبادلہ خیال کیا۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے اپنے اسرائیلی ہم منصب اشکنزی سے فلسطینیوں کے لئے انسانی امداد نیز اسرائیل اور عرب ممالک کے مابین تعلقات کو معمول پر لانے پر تبادلہ خیال کیاہے۔

محکمہ خارجہ کی ترجمان نیڈ پرائس نے جمعہ کے روز پریس ریلیزمیں کہا کہ "سکریٹری اور اسرائیلی وزیر خارجہ نے علاقائی سلامتی کے چیلنجوں، فلسطینی عوام کو انسانی امداد بہم پہنچانے، اور عرب ممالک کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے پر تبادلہ خیال کیا"۔

بائیڈن انتظامیہ نے فلسطینیوں کو کووڈ-19 کی روک تھام میں مدد کے لئے 1.5 کروڑ ڈالر مختص کیے ہیں اور ڈونالڈ ٹرمپ کے دور میں معطل کی جانے والی امریکی امداد کو دوبارہ مکمل بحال کرنے پر غور کرنا چاہتی ہے۔

پرائس نے کہا کہ "امریکی سکریٹری خارجہ نے انتظامیہ کے اس یقین پر زور دیا کہ اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کو آزادی ، سلامتی ، خوشحالی ، اور جمہوریت کے مساوی اقدار سے لطف اندوز ہونے کا حق ملنا چاہئے"۔

بائیڈن انتظامیہ اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان امن مذاکرات کو بحال کرنے کے لئے راہیں تلاش کررہی ہیں اور دونوں فریقوں سے یکطرفہ اقدام سے گریز کرنے کی اپیل کی ہے۔پرائس نے کہا کہ بلنکن نے اسرائیل کی سلامتی کے تئيں امریکہ کے پختہ عزم کا بھی اعادہ کیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔