مسئلہ فلسطین کے دو ریاستی حل کی حمایت کرتے ہیں: متحدہ عرب امارات

اماراتی بین الاقوامی تعاون کے امور کی وزیر مملکت ریم الہاشمی نے باور کرایا ہے کہ ان کا ملک مسئلہ فلسطین کے دو ریاستی حل کی حمایت کرتا ہے اور اس حل کو پھر سے مذاکرات کی میز پر پیش کرنے کے لیے کوشاں ہے

متحدہ عرب امارات کی بین الاقوامی تعاون کے امور کی وزیر مملکت ریم الہاشمی
متحدہ عرب امارات کی بین الاقوامی تعاون کے امور کی وزیر مملکت ریم الہاشمی
user

قومی آوازبیورو

دبئی: متحدہ عرب امارات کی بین الاقوامی تعاون کے امور کی وزیر مملکت ریم الہاشمی نے باور کرایا ہے کہ ان کا ملک مسئلہ فلسطین کے دو ریاستی حل کی حمایت کرتا ہے اور اس حل کو پھر سے مذاکرات کی میز پر پیش کرنے کے لیے کوشاں ہے۔ ریم امارات کے اس وفد میں شامل ہیں جو منگل کے روز اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے پر دستخط کے سلسلے میں واشنگٹن پہنچ چکا ہے۔

اماراتی خاتون وزیر اتوار کی شب امریکی نیوز چینل سی این این کو انٹرویو دے رہی تھیں۔ امارات اور اسرائیل کے درمیان طے پانے والے امن معاہدے کی اہمیت کے حوالے س ریم کا کہنا تھا کہ "ہم ملکوں کے درمیان اور مشرق وسطی میں بات چیت کی ضرورت پر بھرپور یقین رکھتے ہیں۔ ہم مشرق وسطی کو مختلف طریقے سے دیکھ رہے ہیں۔

اسی طرح ہمارے پاس اپنی عرب دنیا کے حوالے سے مہم جوئی پر مبنی ویژن ہے جو نوجوان کی توانائیوں سے بھرپور ہے۔ وہ نوجوان جو ایک مختلف مستقبل کی تعمیر کے لیے کوشاں ہیں ، ایسا مستقبل جو ماضی کے بوجھ تلے دبا ہوا نہ ہو .. یہ نوجوان ایک ایسے مستقبل کے خواہاں ہیں جو سائنس، ایجادات، ترقی، تجارت اور سرمایہ کاری پر مبنی ہو"۔

یاد رہے کہ اماراتی وزیر خارجہ اتوار کی شام امریکی دارالحکومت واشنگٹن پہنچے ہیں۔ وہ منگل کے روز امارات اور اسرائیل کے درمیان امن معاہدے پر دستخط کی تقریب میں شریک ہوں گے۔ اس موقع پر اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو بھی موجود ہوں گے۔

گذشتہ ماہ 13 اگست کو متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان تعاون کے حوالے سے اتفاق رائے کا اعلان کیا گیا تھا۔ بعد ازاں اگست کے اواخر میں اسرائیل کی پہلی کمرشل پرواز ابوظبی پہنچی تھی۔

(العربیہ ڈاٹ نیٹ)

next