عمان کے سلطان قابوس بن سعید کا انتقال، پی ایم مودی کے ذریعہ خراج عقیدت پیش

قابوس بن سعید کے انتقال سے پورے عمان میں غم کا ماحول ہے۔ ملک میں تین دن کے قومی غم کا اعلان کیا گیا ہے اور اس دوران سبھی سرکاری و پرائیویٹ دفاتر میں تعطیل رہے گی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

عمان کے سلطان قابوس بن سعید کا جمعہ کی دیر شام انتقال ہو گیا۔ یہ خبر پھیلنے کے بعد عمان میں غم کا ماحول دیکھا جا رہا ہے اور تین دنوں تک قومی غم منانے کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ ان تین دنوں تک عمان میں تعطیل رہےگی اور پرائیویٹ و سرکاری دفاتر نہیں کھلیں گے۔ 79 سالہ قابوس 1970 میں عمان پر حاکم ہوئے تھے اور انھوں نے برطانیہ کی مدد سے تختہ پلٹ کیا تھا۔ قابوس کو کوئی اولاد نہیں ہے اور نہ ہی انھوں نے کسی کو اپنا جانشیں بنایا ہے۔

سلطان قابوس 1970 سے مسلسل اس عہدے پر برقرار تھے۔ سلطان کے دفتر نے کہا کہ ان کا طویل علالت کے بعد انتقال ہو گیا۔ ان کے انتقال پر رائل کورٹ کے دیوان نے مرحوم کے انتقال پر تعزیتی پیغام جاری کیا۔تعزیتی پیغام میں کہا گیا کہ ’’14 ویں جمادى الاول سلطان قابوس بن سعید کا جمعہ کی شب انتقال ہو گیا۔ گزشتہ 50 برسوں میں ایک وسیع نشاۃ ثانیہ کے قیام کے بعد سے انہوں نے 23 جولائی 1970 کو اقتدار سنبھالا تھا۔ اس نشاۃ ثانیہ کے نتیجے میں ایک متوازن خارجہ پالیسی عمل میں آئی جسے پوری دنیا نے احترام کے ساتھ سراہا‘‘۔

1996 کے ایک قانون کے تحت برسراقتدار فیملی کے ذریعہ گدی خالی ہونے کے تین دنوں کے اندر ایک جانشیں کا انتخاب کیا جائے گا۔ ساتھ ہی اگر وہ اس انتخاب سے متفق نہیں ہوتے ہیں تو فوجی اور سیکورٹی افسران کی ایک کونسل، سپریم کورٹ کے چیف اور دو مشیر اسمبلیوں کے چیف اس شخص کو برسراقتدار لائیں گے جس کا نام خفیہ طور پر سلطان نے سیل بند خط میں لکھا ہے۔

قابوس بن سعید کے انتقال کی خبر کے بعد ہندوستان کے وزیر اعظم نریندر مودی نے اظہارِ غم کیا ہے۔ انھوں نے ٹوئٹ کے ذریعہ انھیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’’سلطان قابوس بن سعید کے انتقال کے بارے میں جان کر مجھے گہرا غم ہوا ہے۔ وہ ایک دوراندیش اور سیاسی لیڈر تھے جنھوں نے عمان کو ایک جدید اور خوشحال ملک میں بدل دیا۔ وہ ہمارے علاقے اور دنیا کے لیے امن کی علامت تھے۔‘‘

ایک دیگر ٹوئٹ کے ذریعہ پی ایم نریندر مودی نے سلطان کی تعریف کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’’سلطان قابوس ہندوستان کے سچے دوست تھے اور انھوں نے ہندوستان اور عمان کے درمیان ایک اچھی اسٹریٹجک شراکت داری پیدا کرنے کے لیے مضبوط قیادت فراہم کی۔ میں ہمیشہ ان سے ملی گرم جوشی اور محبت کو سنجو کر رکھوں گا۔ ان کی روح کو سکون ملے۔‘‘

Published: 11 Jan 2020, 9:48 AM