سعودی عرب: تِلوں کا تیل تیار کرنے کے لیے کولہو کا روایتی طریقہ رائج

تیل کی تیاری کی صنعت میں سامنے آنے والی تبدیلوں کے باوجود یہاں موروثی عوامی طریقے سے تیل نکالا جاتا ہے اور یہ پیشہ ’السليط‘ کے نام سے معروف ہے

سعودی عرب: تِلوں کا تیل تیار کرنے کے لیے کولہو کا روایتی طریقہ رائج
سعودی عرب: تِلوں کا تیل تیار کرنے کے لیے کولہو کا روایتی طریقہ رائج
user

قومی آوازبیورو

سعودی عرب کے صوبے جازان میں تِلوں کا روغن تیار کرنے کے سلسلے میں روایتی طریقہ برقرار ہے۔ تیل کی تیاری کی صنعت میں سامنے آنے والی تبدیلوں کے باوجود یہاں موروثی عوامی طریقے سے تیل نکالا جاتا ہے۔ یہ پیشہ "السليط" کے نام سے معروف ہے۔

جازان میں تلوں کا تیل نکالنے والے ایک کولہو کے مالک علی بن عواجی دغریری نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ روایتی طریقے سے تِلوں کا روغن نکالنے کا عمل علاقے میں موروثی پیشے کے حوالے سے بڑی اہمیت کا حامل ہے۔ تلِوں کے بیجوں سے حاصل ہونے والے روغن کو علاقے کے اور اس کے باہر بہت سے لوگ ترجیح دیتے ہیں۔

دغریری کے مطابق تیل نکالنے کے عمل کا آغاز تیل کے بیجوں کی صفائی کرنے سے ہوتا ہے تا کہ براہ راست اس کا روغن نکالنا آسان ہو جائے۔ اس بات کو ترجیح دی جاتی ہے کہ اس عمل میں علاقے میں مقامی طور پر پیدا ہونے والے بیجوں کا استعمال کیا جائے جو اپنی کوالٹی کے سبب جانے جاتے ہیں۔ بعض لوگ اس مقصد کے لیے علاقے کے باہر سے بھی بیج لے کر آتے ہیں۔ بیجوں کو صاف کرنے کے بعد سلندر نما لکڑی میں رکھا جاتا ہے۔ اس کے بعد روغن نکالے جانے کا عمل شروع ہوتا ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ روایتی کولہو میں گھڑی کی مخالف سمت چکر لگانے کے لیے اونٹ کا استعمال کیا جاتا ہے۔ اس عمل کا دورانیہ چار سے پانچ گھنٹے ہوتا ہے۔ اس دوران اونٹ کی آنکھوں پر پٹی باندھ دی جاتی ہے تا کہ اونٹ کو یہ محسوس ہو کہ وہ طویل سیدھے راستے پر چل رہا ہے۔

روغن کے ایک کشید کے پورے ہونے پر اونٹ کو تبدیل کر دیا جاتا ہے۔ دوسری کشید میں دوسرا اونٹ استعمال ہوتا ہے یہاں تک کہ پہلے اونٹ کو آرام مل جائے۔ اس عمل سے نکالا جانے والا روغن خالص ہوتا ہے جس کو صاف کر کے شفاف بنایا جاتا ہے۔ بعد ازاں یہ کولہو میں موجود برتنوں میں آ جاتا ہے اور پھر اس کی فروخت شروع کی جاتی ہے۔

(العربیہ ڈاٹ نیٹ)

next