سعودی ایئرپورٹ پر حوثی باغیوں کا حملہ، طیارہ جل کر تباہ، وزیر خارجہ کی امریکی ہم منصب سے گفتگو

سعودی عرب کے جنوب مغربی شہر ابہا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر یمن سے تعلق رکھنے والے حوثی باغیوں کے حملے سے ایک طیارے میں آگ لگ گئی

علامتی تصویر
علامتی تصویر
user

قومی آوازبیورو

ریاض: سعودی عرب کے جنوب مغربی شہر ابہا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر یمن سے تعلق رکھنے والے حوثی باغیوں کے حملے سے ایک طیارے میں آگ لگ گئی۔ عرب اتحاد نے بدھ کے روز حوثیوں کے اس حملے کی تصدیق کی اور کہا کہ سویلین طیارے کو لگنے والی آگ پر قابو پا لیا گیا ہے۔

حملہ کے ایک روز بعد جمعرات کے روز سعودی عرب کے وزیر خارجہ فیصل بن فرحان نے اپنے امریکی ہم منصب اینٹنی بلنکن سے ٹیلی فون پر ابہا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ڈرون حملے سمیت علاقائی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا۔ سعودی عرب کی سرکاری نیوز ایجنسی ’ایس پی اے‘ کے مطابق شہزادہ فیصل اور اینٹنی بلنکن سعودی عرب نے ایران کی پروردہ حوثی ملیشیاؤں کی معاندانہ کارروائیاں روکنے اور یمن کے جاری بحران کے سیاسی تصفیے کے حل کی ضرورت پر زور دیا۔

اینٹنی بلنکن نے ابہا ہوائی اڈے پر حملے میں مسافر جہاز کو پہنچنے والے نقصان اور آتشزدگی پر واشنگٹن کی مذمت کا ایک مرتبہ پھر اعادہ کیا۔ ایرانی حمایت یافتہ تنظیم نے ہوائی اڈے پر حملے کے فورا بعد اس کی ذمہ داری قبول کی تھی۔

حوثیوں کے فوجی ترجمان یحییٰ سرائے نے ایک ٹویٹ کے ذریعے بتایا کہ ’’بغیر پائیلٹ ڈرون فضائیہ نے یمنی عوام پر حملوں اور مقاصد کے لئے استعمال ہونے والے ابہا کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کی ایئر فیلڈ پر لڑاکا طیاروں کو چار ڈرونز سے نشانہ بنایا۔ الحمد للہ! یہ نشانہ ٹھیک بیٹھا۔‘‘

امریکی وزیر خارجہ اینٹنی بلنکن کا کہنا ہے کہ "ایسے وقت میں جب کہ حوثی ملیشیا سعودی عرب پر حملے کر رہی ہے، ہم ہاتھ باندھے کھڑے نہیں رہیں گے"۔ امریکی وزیر خارجہ نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ "سعودی عرب ایک اہم سیکورٹی شراکت دار ہے"۔

قبل ازیں عرب اتحاد نے ایک اور بیان میں بتایا تھا کہ اس نے یمن سے سعودی عرب کی جانب چھوڑے گئے حوثیوں کے دو مسلح ڈرونز کو تباہ کردیا ہے۔اتحاد کا کہنا ہے کہ ’’حوثیوں نے بین الاقوامی انسانی قانون کی خلاف ورزیاں جاری رکھی ہوئی ہیں اور وہ سعودی عرب میں شہری اہداف کو جان بوجھ کر نشانہ بنانے کی کوشش کررہے ہیں۔‘‘

ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں نے اس ہفتے میں سعودی عرب کی جانب ایک مرتبہ پھر ڈرون اور بیلسٹک میزائلوں سے حملے تیزکردیے ہیں۔سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے گذشتہ سوموار کو قاہرہ میں عرب لیگ کے ہنگامی اجلاس میں اس جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایران کی حمایت یافتہ ملیشیائیں عرب ممالک کی سلامتی اور استحکام کے لیے خطرے کا موجب بنی ہوئی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 11 Feb 2021, 5:10 PM
next