سعودی عرب: کووِڈ-19کے یومیہ کیس وَبا کے آغاز کے بعد بلند ترین سطح پر!

سعودی عرب میں کووِڈ-19 کی وَبا پھیلنے کے بعد جمعرات کو اب تک سب سے زیادہ یومیہ کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں اور وزارتِ صحت نے 5499 نئے کیسوں کی تشخیص کی اطلاع دی ہے

تصویر العربیہ ڈاٹ نیٹ
تصویر العربیہ ڈاٹ نیٹ
user

قومی آوازبیورو

الریاض: سعودی عرب میں کووِڈ-19 کی وَبا پھیلنے کے بعد جمعرات کو اب تک سب سے زیادہ یومیہ کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں اور وزارتِ صحت نے 5499 نئے کیسوں کی تشخیص کی اطلاع دی ہے۔ پہلے سے اس مہلک وائرس کا شکار دو افراد وفات پاگئے ہیں۔ بدھ کو 5362 کیس ریکارڈ کیے گئے تھے۔سعودی عرب میں انتہائی متعدی قسم اومیکرون کے پھیلنے کے بعد حالیہ ہفتوں میں یومیہ کیسوں کی تعداد میں تیزی سےاضافہ ہوا ہے۔

سعودی عرب نے دسمبرکے اوائل میں اومیکرون متغیّرکا پہلا کیس ریکارڈ کیا تھا۔اس کے بارے میں خیال کیاجاتا ہے کہ یہ شمالی افریقا کے ایک نامعلوم ملک سے آیا تھا۔ مملکت میں وَبا کے آغاز سے اب تک مجموعی طورپر کووِڈ-19 کے599,044 کیسز ریکارڈ کیے گئے ہیں اور 8,901 اموات ہوئی ہیں۔


ملک بھرمیں ویکسین لگانے کی مہم بھی زورشور سے جاری ہے اور 50 فی صد سے زیادہ آبادی کو مکمل ویکسین لگائی جاچکی ہے۔ سعودی عرب نے حال ہی میں اپنے ہاں نافذالعمل کووِڈ-19 کے قواعد وضوابط پرنظرثانی کی ہے اورخلاف ورزی کے مرتکبین پر جرمانے کی رقم بڑھا دی ہے۔

سعودی وزارت داخلہ کے مطابق جو لوگ سرکاری یا نجی مقامات میں داخل ہونے سے پہلے درجہ حرارت کی جانچ سے انکارکرتے ہیں اور سماجی فاصلے کے قواعد پرعمل نہیں کرتے،ان پر266 ڈالر (1000 سعودی ریال) جرمانہ عاید کیا جائے گا۔ بار بارجرم کے اعادے کی صورت میں جرمانے کی رقم 266,000 ڈالر (100,000 ریال) تک پہنچ سکتی ہے۔اس کے علاوہ اب اندرونی اور بیرونی دونوں جگہوں پرچہرے پر دوبارہ ماسک پہننے کی ضرورت ہے۔


سعودی عرب نے گذشتہ ہفتے مکہ مکرمہ میں مسجدحرام اور دوسرے مقامات میں سماجی فاصلے کی پابندیوں کو بھی دوبارہ نافذ کردیا تھا۔یہ اقدام کروناوائرس کے یومیہ کیسوں کی تعداد میں اضافے کے پیش نظر کیا گیا تھا۔مسجد حرام میں سماجی فاصلے کی رہ نمائی کے لیے فرش پر اب دوبارہ نشانات لگادیے گئے ہیں۔قبل ازیں ان نشانات کو17 اکتوبر کوہٹا دیا گیا تھا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔