ایران میں زہریلی شراب پینے سے 8 افراد کی موت

ایک غلط عقیدہ یہ بھی ہے کہ الکاحول پینا یا گارگل کرنا کوویڈ 19 کو روک سکتا ہے اسی وجہ سے وبائی مرض کے آغاز میں ایران میں میتھانول کے استعمال میں اضافہ ہوا تھا۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ایران کے باندر عباس میں منگل کو گھر میں بنی زہریلی شراب پینے سے کم از کم آٹھ افراد کی موت ہو گئی۔ بی بی سی نے مقامی محکمہ صحت کی اہلکار ڈاکٹر فاطمہ نوروزیان کے حوالے سے بتایا کہ زہریلی شراب پینے والے مزید 51 افراد اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان میں سے 17 کی حالت تشویشناک ہے۔

اس دوران پولیس نے شراب بنانے اور بانٹنے کے الزام میں آٹھ افراد کو گرفتار کیا ہے۔اطلاعات کے مطابق باندر عباس کے حکام نے شراب میں زہریلی چیز کی نشاندہی نہیں کی ہے۔


میتھانول کو عام طور پر اینٹی فریز، سالوینٹس اور ایندھن بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، لیکن بعض اوقات الکاحول کی مقدار کو بڑھانے کے لیے اسے غیر قانونی طور پر تیار کردہ اسپرٹ میں شامل کیا جاتا ہے۔ اگر اسے تھوڑی مقدار میں بھی کھایا جائے تو یہ اندھا پن یا موت کا سبب بن سکتا ہے۔

ایک غلط عقیدہ یہ بھی ہے کہ الکاحول پینا یا گارگل کرنا کوویڈ 19 کو روک سکتا ہے اسی وجہ سے وبائی مرض کے آغاز میں ایران میں میتھانول کے استعمال میں اضافہ ہوا تھا۔


اپریل 2020 میں، وزارت صحت نے کہا کہ زہریلی شراب کی وجہ سے تین مہینوں میں 500 سے زیادہ افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور 5000 کوعلاج کی ضرورت ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔