سعودی عرب میں ریاض سمیت کئی شہروں میں 24 گھنٹے کا کرفیو نافذ

پانچ شہر ریاض،تبوک ، الدمام ، ظہران ، الہفوف کے علاوہ چار گورنریوں جدہ ، طائف ، القطیف اور الخُبر میں دن رات کا کرفیو اور لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کورونا وائرس کے متاثرین کی تعداد سعودی عرب میں بڑھکر 2605 ہوگئی ہے اور وہاں پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران چار اموات رپورٹ ہوئی ہیں جس کے بعد کورونا سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 38 ہو گئی ہے۔سعودی عرب سعودی حکومت نے اس کے بعد اس مہلک وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے دارالحکومت ریاض سمیت کئی شہروں میں 24 گھنٹے کا کرفیو نافذ کردیا ہے۔

سعودی وزارت داخلہ کے ذرائع کے مطابق پانچ شہروں ریاض،تبوک ، الدمام ، ظہران ، الہفوف کے علاوہ چار گورنریوں جدہ ، طائف ، القطیف اور الخُبر میں دن رات کا کرفیو اور لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔

قبل ازیں سعودی وزارت صحت نے مملکت میں کرونا وائرس سے چار نئی اموات کی تصدیق کی ہے۔مملکت میں اب تک اس مہلک وائرس سے 38 افراد وفات پا چکے ہیں۔وزارت صحت نے کرونا وائرس کے 60 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے۔اس طرح اب کل کیسوں کی تعداد2605 ہوگئی ہے۔

وزارت صحت نے اتوار کو بتایا تھا کہ کرونا وائرس کے تصدیق شدہ کیسوں میں 47 فیصد سعودی شہری ہیں اور 53 فی صد غیر ملکی ہیں۔وہ مملکت میں روزگار کے سلسلے میں مقیم ہیں یا مختصر میعاد کے ویزوں پر آئے تھے۔

واضح رہے کہ سعودی حکومت نے شہریوں کی آزادانہ نقل وحرکت پر پابندی عاید کررکھی ہے اور بڑے شہروں میں پہلے ہی کرفیو میں نافذ ہے۔ وزارتِ صحت کا کہنا ہے کہ لوگوں کی خریداری اور سیر وتفریح کے لیے نقل وحرکت تشویش کا سبب ہے۔

شاہ سلمان نے ایک فرمان جاری کیا تھاجس کے تحت بیرون ملک سے سعودی شہریوں کو واپس لانے کا حکم دیا ہےاور کہا ہے کہ کرونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ممالک میں پھنسے ہوئے شہریوں کی واپسی کو ترجیح دی جائے۔سعودی حکومت نے ان افراد کے لئے ایک ہاٹ لائن نمبر دیا ہے جہاں سے وہ واپسی کاپورا طریقہ پوچھ سکتے ہیں۔