یمن کے ماریب میں جھڑپ ، فضائی حملے میں 50 ہلاک

لڑائی میں 44 سے زیادہ حاوثی باغی مارے گئے اور توپ خانے کی گولہ باری اور تنظیم کے ہوائی حملوں کے دوران باغیوں کے ساتھ بکتر بند گاڑیوں پر بمباری کی گئی۔

ماریب کی فائل تصویر آئی اے این ایس
ماریب کی فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

یمن کے ماریب صوبے میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں سرکاری دستوں اور حاوثی باغیوں کے درمیان ہوئے تصادم میں کم از کم 50 لوگوں کی موت ہوگئی ہے۔ سرکاری فوجی ذرائع نے اتوار کو یہ اطلاع دی ہے۔ ذرائع نے کہا ’’حاوثی کی قیادت والے اتحاد کی حامی فوج کے جنگی طیاروں نے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ماریب کے مغرب میں سرواہ ضلع میں ال مشجہ، القصرہ اور راگھوان کی صف اول میں ایران حامی حاؤثی باغیوں پر کئی بار حملے کئے‘‘۔

انہوں نے کہا ’’لڑائی میں 44 سے زیادہ حاوثی باغی مارے گئے اور توپ خانے کی گولہ باری اور تنظیم کے ہوائی حملوں کے دوران باغیوں کے ساتھ بکتر بند گاڑیوں پر بمباری کی گئی‘‘۔ ذرائع نے بتایا کہ اس دوران چھ فوجی بھی مارے گئے اور معدد زخمی ہوئے ہیں۔


اس دوران سعودی عرب کے العربیہ ٹی وی نے بتایا کہ سعودی فضائی دفاعئی نظام نے سنیچر کی تاخیر شب سعودی بحر احمر کا بندرگاہی شہر جازان کی جانب حاؤثی باغیوں کی جانب سے ڈرون سے چار بم گرائے گئے اور ایک بیلسٹک میزائل کو روک کر ضائع کردیا۔حاوثی باغیوں کی جانب سے ابھی تک اس پر کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔