ہندستان کی دھمکی سے ڈرے سری لنکا کرکٹر، پاکستانی وزیر کا بے تکا بیان

پاکستان کے وزیر فواد حسین چودھری نے سری لنکا کے 10 کھلاڑیوں کے پاکستان دورے پر نہیں جانے سے متعلق دعوی کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندستان نے ان کھلاڑیوں کو پاکستان نہ جانے کے لئے دھمکایا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

نئی دہلی: پاکستان کے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی وزیر فواد حسین چودھری نے سری لنکا کے 10 کھلاڑیوں کے پاکستان دورے پر نہیں جانے سے متعلق دعوی کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہندستان نے ان کھلاڑیوں کو پاکستان نہ جانے کے لئے دھمکایا ہے۔

فواد نے کہا کہ ہندستان نے سری لنکا کے کھلاڑیوں کو پاکستان دورے پر جانے کے تعلق سے دھمکایا اور کہا کہ اگر وہ وہاں کرکٹ کھیلنے جائیں گے تو آئی پی ایل میں ان کا معاہدہ منسوخ کر دیا جائے گا۔ فواد نے ٹویٹ کر کہاکہ ایک اسپورٹس كمٹیٹر نے مجھے بتایا ہے کہ ہندستان نے سری لنکا کے کھلاڑیوں کو پاکستان دورہ کرنے کے خلاف دھمکایا اور کہا کہ اگر وہ پاکستان جائیں گے تو انہیں آئی پی ایل میں کھیلنے نہیں دیا جائے گا۔ اس کی ہم سخت مذمت کرتے ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ سری لنکا کے سرکردہ کھلاڑیوں نے پاکستان دورے پر جانے سے انکار کر دیا ہے۔ ان کھلاڑیوں میں کپتان لست ملنگا، اینجلو میتھیوز، دنیش چنڈيمل، سرنگا لکمل، دمتھ كرونارتنے، تسارا پریرا، اكيلا دھننجے، دھننجے جی سلوا، کشل پریرا اور نروشن ڈكویلا شامل ہیں۔ ان تمام کھلاڑیوں نے سیکورٹی کے پیش نظر کرکٹ سری لنکا بورڈ (ایس ایل سی ) کو پاکستان دورے میں جانے پر اپنی معذوری ظاہر کی ہے۔

اس دوران ایس ایل سی نے ڈكویلا اور پریرا کو کیریبین پریمیئر لیگ (کارپورل) میں کھیلنے کے لئے این او سرٹیفکیٹ دینے سے انکار کر دیا ہے۔ ایس ایل سی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ایشلے ڈی سلوا نے کہا کہ یہ بورڈ کی پالیسی ہے کہ اگر کوئی کھلاڑی قومی دورے کے لئے ٹیم میں شامل ہے اور وہ اس دورے سے اپنا نام واپس لے رہا ہے تو اسے غیر ملکی لیگ میں کھیلنے کے لئے این او سرٹیفکیٹ نہیں دیا جائے گا۔ سری لنکا کو پاکستان کے ساتھ تین ون ڈے اور تین ٹوئنٹی -20 میچ کھیلنے ہیں۔ سری لنکا کا پاکستان دورہ 27 ستمبر سے شروع ہونا ہے۔